The news is by your side.

Advertisement

بھارت کشمیر سے ٹیلی فون، انٹرنیٹ بندش فوری ختم کرے، ہیومن رائٹس واچ

نیویارک : انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ہیومن رائٹس واچ نے مطالبہ کیا ہے کہ بھارت مقبوضہ کشمیر سے ٹیلی فون اور انٹرنیٹ کی بندش فوری ختم کرے، پابندیوں سے کشمیری آبادی میں غصہ اور افواہیں جنم لے رہی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کے مظالم اور مودی حکومت کی جانب سے غیر قانونی اقدامات کیخلاف دنیا بھر سے آوازیں اٹھ رہی ہیں۔

اس سلسلے میں انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ہیومن رائٹس واچ نے بھی بھارتی حکومت سے کشمیر میں غیر آئینی اقدامات ختم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

اس حوالے سے ہیومن رائٹس واچ ساؤتھ ایشیا کی ڈائریکٹر میناکشی گنگولی نے مطالبہ کیا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں انٹرنیٹ اور ٹیلی فون پر طویل عرصے سے پابندی ہے جو انسانی حقوق کی کھلی خلاف ورزی ہے۔

لہٰذا بھارت کشمیر سے ٹیلی فون اور انٹرنیٹ کی بندش فوری طور پر ختم کرے، میناکشی گنگولی کا مزید کہنا ہے کہ انٹرنیٹ اور ٹیلیفون کی بندش سے کشمیر میں آباد لوگوں کو غیرمتناسب نقصان پہنچ رہا ہے۔

ان پابندیوں سے کشمیری آبادی میں غصہ اور افواہیں جنم لے رہی ہیں، کشمیر میں انسانی حقوق کی صورتحال دن بہ دن ابتر ہوتی جارہی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں