The news is by your side.

Advertisement

برف کا طوفان جس نے سائنس دانوں کو حیران کردیا

امریکا کی ریاست منیسوٹا کو دس ہزار جھیلوں کی سرزمین کہا جاتا ہے۔ یہاں‌ کئی بڑی جھیلیں اور تفریح گاہیں ہیں جہاں‌ ہر سال لاکھوں کی تعداد میں لوگ آتے اور قدرت کے حسین نظاروں سے بہلتے ہیں۔

اس علاقے میں مختلف برسوں کے دوران ناگہانی آفات کی وجہ سے مالی اور جانی نقصانات ہوتے رہے ہیں، لیکن ایک قدرتی آفت ایسی تھی جس نے سب کو حیرت میں‌ ڈال دیا۔

یہ ایک جھیل میں بننے والا برف کا طوفان ہے جسے بعد میں اپنی نوعیت کا عجیب واقعہ قرار دیا گیا۔

دریاؤں کا بپھرنا یا سمندری طوفان یا شدید برف باری کوئی نئی بات نہیں اور ان قدرتی آفات کے نتیجے میں انسان نے مالی اور جانی نقصانات بھی جھیلے ہیں، مگر کسی جھیل میں جمی ہوئی برف کا طوفان پہلے کبھی نہیں دیکھا گیا تھا۔

خوف ناک بات یہ ہے کہ 2018 کا یہ برفانی طوفان جھیل اور اس کے قرب و جوار تک محدود نہ رہا بلکہ میلوں دور تک تباہی کا باعث بنا۔

اس طوفان کے وقت اچانک تیز ہواؤں سے برف چھوٹی بڑی سلوں یا ٹکڑوں کی صورت ‌جھیل کے کناروں پر اور دور دور جاکر گرنے لگے۔ یہ ٹکڑے قریبی آبادی تک ہوا کے زور سے اڑ کر پہنچنے لگے اور پوری قوت سے عمارتوں اور گاڑیوں سے ٹکرائے اور بہت نقصان ہوا۔

اسی طرح کا ایک طوفان کینیڈا کے ساحل پر بھی آیا تھا۔ امریکا میں‌ برف کا وہ طوفان ایک عجوبہ اور معما ہے۔

(تلخیص و ترجمہ: سائرہ فاروق)

Comments

یہ بھی پڑھیں