The news is by your side.

Advertisement

چیلنجز سے نمٹنے کیلئے طاقتور حکومت ہی بڑے فیصلے کرسکتی ہے، عمران خان

بہاولپور : تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہا ہے کہ چیلنجز سے نمٹنے کیلئے طاقتور حکومت ہی بڑے فیصلے کرسکتی ہے،25جولائی کو آپ نے صرف نظریے اور ملک کے لئے سوچنا ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے بہاولپور میں پی ٹی آئی کے زیر اہتمام ایک بڑے جسلہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا، عمران خان نے کہا کہ پاکستان کو اس وقت شدید معاشی بحران اور مشکلات کا سامنا ہے، ملک کی معاشی صورتحال کو بہتر کرنا ہماری اولین ترجیح ہوگی۔

چیلنجز سے نمٹنے کیلئے طاقتور حکومت ہی بڑے فیصلے کرسکتی ہے، انشااللہ بدھ کو پاکستان کے مستقبل کا فیصلہ ہونے جارہا ہے، اسی پاکستان سے آپ کو قرضوں کی دلدل سے نکال کر دکھاؤں گا، بہاولپور کے لوگ25جولائی کیلئے تیار رہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ الیکشن کے بعد پیپلزپارٹی سے اتحاد کے بجائے اپوزیشن بینچوں پر بیٹھنے کو ترجیح دینگے، ن لیگ اورپیپلز پارٹی سے کوئی اتحاد نہیں ہوگا، یہ لوگ30سال سے بار بار باریاں لے رہے ہیں، ملک کو مقروض کر کے عوام پر ظلم کیا گیا، قرضہ حکومت پر نہیں عوام پر چڑھتا ہے جس سے مہنگائی بڑھتی ہے، جب بھی حکومت جاتی ہے خزانہ خالی اور فضل الرحمان چھوڑ کرجاتی ہے۔

چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ ن لیگ کو ڈر ہے کہ یہ الیکشن ہارنے جا رہے ہیں، ان کو یہ بھی ڈر ہے کہ اس بار ایمپائر ان کے اپنے نہیں ہیں، گزشتہ انتخابات میں انہوں نے اپنے ایمپائر کے ساتھ میچ کھیلا تھا اور ہم نے الیکشن 2013میں مبینہ دھاندلی کیخلاف احتجاج کیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ25جولائی کو ووٹ نہ دینے والے کو صرف اپنی فکر ہوگی ملک کی نہیں، معاشرے میں ظلم ہوگا تو سب کو اس کے آگے کھڑا ہونا ہوگا، ظلم کامقابلہ کرنیوالا ہی اپنے لئے آسانی پیدا کرتا ہے، کفر کا نظام چل جائے گا مگر ظلم اورناانصافی کا نظام نہیں چل سکتا، بزدل اور خود غرض لوگ ظلم کیخلاف کھڑے نہیں ہوتے، اللہ کا حکم ہے جہاں ظلم ہو رہا ہے اس کے خلاف کھڑے ہوجاؤ۔

عمران خان نے کہا کہ اقتدار میں آنے کے بعد سب سے پہلے میں پنجاب کی پولیس کو ٹھیک کروں گا، پنجاب پولیس میں بھی کے پی کی طرح میرٹ لائیں گے، انہیں عزت دینگے، کے پی میں کسی کیخلاف سیاسی انتقامی کارروائی نہیں کی جاتی، اب پنجاب پولیس کو حمزہ یا شہباز شریف جیسا طاقتور شخص کوئی حکم نہیں دے سکے گا۔

نیب، ایف آئی اے، ایف بی آر سمیت دیگر اداروں کوٹھیک کرینگے، کرپشن پر قابو پانے کیلئے احتساب مجھ سے شروع ہوگا، اس کے بعد ہمارے وزیروں سے ہوکر نیچے تک جائیگا، پاکستان میں کبھی کسی جماعت نے کرپشن کے الزام پر20ایم پی اے کو نہیں نکالا گیا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔ 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں