The news is by your side.

Advertisement

6 ماہ تک لڑکی کے ساتھ اجتماعی زیادتی کیس نے بھارت کو ہلا کر رکھ دیا

ہریانہ: بھارتی ریاست ہریانہ کے ایک ضلع بھیوانی میں ایک 16 سالہ لڑکی کے ساتھ 7 افراد کی 6 ماہ تک اجتماعی زیادتی کیس نے ملک بھر کے لوگوں کے دل دہلا دیے ہیں۔

یہ کیس تب سامنے آیا جب لڑکی کے بارے میں گھر والوں کو معلوم ہوا کہ وہ ماں بننے والی ہے، تب لڑکی کے والد نے 10 مارچ کو پولیس اسٹیشن میں ایف آئی آر درج کرائی۔

بھیوانی کے علاقے باوانی خیرہ کے ایس ایچ او روندر کمار نے بتایا کہ ملزمان میں 2 کی عمر 50 سال جب کہ دیگر کی 30 سے 35 سال ہے، ملزمان میں باپ بیٹا بھی شامل ہیں۔

زیادتی کرنے والے ملزمان نے لڑکی کو خاموش رہنے کی دھمکی دی تھی، اور کہا تھا کہ اگر اس نے کسی کو بتایا تو وہ اسے زندہ جلا دیں گے، معلوم ہوا کہ مذکورہ لڑکی علاقے کی دکان سے سودا سلف خریدتی تھی جہاں یہ واقعہ پیش آیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ شروع میں لڑکی کو چند افراد نے زیادتی کا نشانہ بنایا، بعد میں چند مزید افراد بھی شامل ہو کر اسے چھ ماہ تک زیادتی کا نشانہ بناتے رہے۔

تھانے میں جو شکایت درج کرائی گئی ہے، اس کے مطابق تمام ملزمان کو لڑکی جانتی تھی، جن میں پرچون کی دکان کا مالک ستیا نارائن اور اس کا بیٹا رویندر بھی شامل تھا۔

ایک ہفتہ گزرنے کے باوجود پولیس نے ابھی تک ملزمان کو گرفتار نہیں کیا ہے، تاہم پولیس نے 3 دفعات کے تحت ایف آئی آر درج کی ہے، جن میں گینگ ریپ، مجرمانہ دھمکی اور بچوں کو جنسی حملوں سے بچاؤ کی دفعات شامل ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں