The news is by your side.

بھارت میں گوگل مشکلات کا شکار : دوسری بار بھی بھاری جرمانہ

بنگلورو : بھارت نے چند دن کے بعد ایک بار پھر دنیا کی سب سے مقبول سرچ انجن کمپنی ’گوگل‘پر جرمانہ عائد کردیا، کمپنی پر الزام ہے کہ اس نے دیگر سروسز کو نقصان پہنچایا ہے۔

بھارتی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق مسابقتی کمیشن (سی سی آئی) نے کمپنی پر 11 کروڑ 30 لاکھ ڈالرز (24 ارب 59 کروڑ پاکستانی روپے سے زائد) کا جرمانہ عائد کیا ہے۔

سی سی آئی کا کہنا ہے کہ جرمانے کی بڑی وجہ گوگل کی جانب سے اپنی ساکھ اور اثر و رسوخ کا فائدہ اٹھاتے ہوئے دیگر سروسز کو آگے بڑھنے سے روکنا ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق گوگل نے بھارت میں مارکیٹ پر غلبے کیلئے ناجائز ہتھکنڈوں کا استعمال کرتے ہوئے ایپ ڈویلپرز کو مجبور کیا کہ وہ اس کے ایپ پیمنٹ سسٹم کو استعمال کریں۔

مسابقتی کمیشن نے گوگل کمپنی پر مزید جرمانہ عائد کرتے ہوئے یہ ہدایت بھی کی ہے کہ وہ ایپ ڈویلپرز کو تھرڈ پارٹی بلنگ یا پیمنٹ سروسز تک رسائی سے نہ روکے۔

گوگل ترجمان کا مؤقف

بھارت میں گوگل کے ترجمان نے نئے جرمانے پر کہا ہے کہ ہم اس فیصلے کا جائزہ لے کر مزید اقدامات کا تعین کریں گے، حکومت کے اس فیصلے کے خلاف عدالت سے رجوع کیا جاسکتا ہے۔

مزید پڑھیں : ناجائز ہتھکنڈوں کا استعمال، گوگل کو اربوں روپے جرمانے کی سزا

یاد رہے کہ اس سے قبل رواں ماہ 20 اکتوبر کو بھارت نے گوگل پر 161ملین ڈالر (13 ارب بھارتی روپے) کا جرمانہ عائد کیا تھا۔

بھارت کے مسابقتی کمیشن (سی سی آئی) نے جمعرات کو ایک بیان میں الزام عائد کیا تھا کہ گوگل اپنے اینڈرائیڈ آپریٹنگ سسٹم کے متعدد اسمارٹ فونز، ویب سرچز، براؤزنگ اور ویڈیو ہوسٹنگ سروسز کے لائسنس کا غلط استعمال کر رہا ہے۔

سی سی آئی نے 199 صفحات کے فیصلے میں گوگل کو 3 ماہ کے اندر تبدیلیوں کا حکم دیا ہے اور ہدایت کی ہے کہ کمپنی کی جانب سے شفافیت کو یقینی بنایا جائے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں