The news is by your side.

Advertisement

پاکستان کا سفارتی تعلقات محدود کرنے کا فیصلہ ، بھارت نےہاتھ جوڑلیے

اسلام آباد : بھارتی دفترخارجہ نے پاکستان سے سفارتی تعلقات محدود کرنے کے فیصلے پر نظرثانی کی درخواست کردی ہے اور کہا  فیصلے پر نظرثانی کرےتاکہ نارمل سفارتی تعلقات بحال رہیں۔

تفصیلات کے مطابق مقبوضہ کشمیرکی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے بعد پاکستان کے سخت ردعمل پر بھارت نےہاتھ جوڑلیے ، پاکستان کی جانب سے بھارت سے تعلقات محدودکرنے کے فیصلے پر بھارتی دفترخارجہ نے بیان میں کہا ہے کہ پاکستان کشمیرکے معاملے پربھارت سے تعلقات محدودکرنے کے فیصلے پرنظرثانی کرے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان کے گزشتہ روزلئے جانے والے فیصلے پرافسوس ہے، پاکستان فیصلے پرنظرثانی کرے تاکہ نارمل سفارتی اور کمیونیکشن چینلز بحال رہیں۔

مزید پڑھیں: پاکستان کا بھارت سے سفارتی تعلقات محدود، دو طرفہ تجارت معطل کرنے کا فیصلہ

یاد رہے گذشتہ روز وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت قومی سلامتی کمیٹی اجلاس میں بھارت کے ساتھ سفارتی تعلقات محدود کرنے اور دو طرفہ تجارت معطل کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔

اجلاس کے بعد جاری اعلامیے میں کہا گیا تھا کہ مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی سیکورٹی کونسل میں لے جایا جائے گا، 14 اگست کشمیریوں سے اظہار یک جہتی کے طور پر منایا جائے گا، جب کہ 15 اگست کو یوم سیاہ منایا جائے گا۔

وزیر اعظم نے اجلاس میں بھارتی عزائم بے نقاب کرنے کے لیے سفارتی ذرایع استعمال کرنے اور مسلح افواج کو مکمل تیار رہنے کی ہدایت کی تھی۔ جبکہ کہا گیا تھا کہ بھارت کے ساتھ دو طرفہ معاہدوں پر بھی نظر ثانی کی جائے گی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں