The news is by your side.

Advertisement

آکسیجن نہ ملی، کرونا میں مبتلا خاتون کی ایمبولینس میں موت

حیدرآباد: بھارت میں ایک اور کرونا مریض اسپتالوں میں آکسیجن نہ ملنے کے باعث جان سے ہاتھ دھو بیٹھا۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی شہر حیدر آباد میں 6 اسپتالوں میں آکسیجن نہ ملنے کے سبب کرونا سے متاثرہ خاتون کی ایمبولینس ہی میں موت واقع ہو گئی۔

اہل خانہ کے مطابق کرونا انفیکشن میں مبتلا خاتون کو آکسیجن کے لیے حیدر آباد کے 6 اسپتالوں میں لے جایا گیا لیکن آکسیجن نہ ملنے کی وجہ سے اس خاتون کی موت ایمبولنس میں ہوگئی۔

یہ واقعہ سکندر آباد کے علاقے سیتاپھل منڈی میں پیش آیا، 48 سالہ انیتا کماری شادی کے بعد اپنے شوہر کے ساتھ بنگلورو میں مقیم تھی، لیکن کرونا وائرس سے متاثر ہونے کے بعد علاج کے لیے 21 اپریل کو حیدر آباد پہنچی تھیں۔

چلتی ایمبولنس سے لاش سڑک پر جا گرِی، ویڈیو نے دل دہلا دیے

انیتا کو 22 اپریل کو سانس لینے میں دشواری کی شکایت پر ایمبولنس میں اسپتال لے جایا گیا، لیکن بد قسمتی سے چھ اسپتالوں پر گھمائے جانے کے بعد بھی آکسیجن میسر نہ آ سکی، رپورٹس کے مطابق پورے بھارت میں ایک طرف کرونا کیسز میں بے انتہا اضافہ ہو چکا ہے دوسری طرف آکسیجن کی شدید قلت کے باعث اموات میں تیزی سے اضافہ جاری ہے۔

انیتا کماری کو ان کے اہل خانہ کملا اسپتال، یشودہ اسپتال، اومنی اسپتال، گلوبل اور نشترا اسپتال لے گئے تھے، لیکن انھیں آکسیجن کی قلت کے باعث اسپتال داخل نہیں کیا گیا۔

بھارت میں کرونا کی ہلاکت خیزی، امیر شہری جان بچانے کے لیے ملک سے بھاگنے لگے

اس دوران انھیں معلوم ہوا کہ ایل بی نگر کے قریب اوزون اسپتال میں آکسیجن اور بستر دستیاب ہے، جب وہ وہاں پہنچے تو مریض کی جانچ کرتے ہوئے ڈاکٹرز نے انیتا کماری کو مردہ قرار دے دیا۔

خاتون کے بھائی نے الزام لگایا کہ حکومت کی بے پروائی کی وجہ سے ان کی بہن کی موت واقع ہوئی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں