The news is by your side.

Advertisement

کیا سرجیکل ماسک کرونا کا پھیلاؤ روکنے میں مؤثر ہے؟ نئی تحقیق میں انکشاف

واشنگٹن : امریکی ماہرین نے انکشاف کیا ہے کہ سرجیکل ماسک کرونا وائرس کا پھیلاؤ روکنے میں انتہائی مفید ہے، یہ ماسک وائرس کے پھیلاؤ کو محدود کرسکتا ہے۔

امریکا کی یالے یونیورسٹی اور اسٹینفورڈ میڈیسین نے سرجیکل ماسک کے ذریعے کرونا کا پھیلاؤ روکنے سے متعلق تحقیق کی جس میں بنگلہ دیش کے 600 دیہات کے ساڑھے تین لاکھ کے قریب افراد نے حصہ لیا۔

تحقیق میں کہا گیا ہے کہ سرجیکل پہننے سےعلامات والی کوویڈ کی بیماریوں کے پھیلاؤ کو کافی حد تک محدود کیا جاسکتا ہے، ماسک پہننے کی وجہ سے علامات والی بیماریوں میں 9.3 فیصد تک کمی آئی تاہم ان نتائج سے مطلب ہرگز نہیں لیا جاسکتا کہ ماسک 9.3 فیصد مؤثر ہے۔

ماہرین کے مطابق ہر فرد پابندی سے ماسک کا استعمال شروع کردی تو یہ شرح بڑھ بھی سکتی ہے۔

ماہرین نے کہا کہ نتائج سے اب سائنسی بحث کا خاتمہ ہوجانا چاہیے کہ فیس ماسک پہننا آبادی کی سطح پر کووڈ کی روک تھام کے لیے مؤثر ہے یا نہیں۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ مجموعی طور پر فیس ماسک کا استعمال کرنے والے گیارہ فیصد تک بیماری کے خطرے سے دور ہوجاتے ہیں جب کہ ساٹھ سال سے زائد افراد پانچ فیصد تک محفوظ ہوجاتے ہیں۔

اس تحقیق پر کام نومبر میں شروع ہوا تھا اور اس کا اختتام اپریل 2021 میں ہوا تھا، بنگلہ دیش میں مارچ 2020 سے فیس ماسک کا استعمال لازمی ہے تاہم لوگوں کی جانب سے اسے اپنانے کی شرح آغاز میں زیادہ نہیں تھی، مگر محققین کی حوصلہ افزائی پر دیہات میں یہ شرح 13 فیصد سے بڑھ کر 42 فیصد تک پہنچ گئی۔

انہوں نے بتایا کہ فیس ماسک کے استعمال میں بڑھانے کے لیے چند طریقے مددگار ثابت ہوئے، یعنی گھر گھر مفت ماسک کی فراہمی، ماسک کے فوائد کے بارے ےمیں تفصیلات بتانا، قابل اعتبار مقامی رہنماؤں کی جانب سے فیس ماسک پہننے کی حوصلہ افزائی کرانا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں