The news is by your side.

Advertisement

ترک فوجی آپریشن سے یورپ میں سیکیورٹی چیلنجز پیدا ہوں گے: جرمن چانسلر

برلن: جرمن چانسلر انجیلا مرکل نے ترک صدر رجب طیب اردوان کے حکم پر شام میں جاری فوجی آپریشن کو ایک بار پھر ختم کرنے کا مطالبہ کردیا۔

تفصیلات کے مطابق جرمن پارلیمان سے خطاب کرتے ہوئے انجیلا مرکل کا کہنا تھا کہ شام میں ترک فوجی آپریشن کے باعث یورپ میں بھی سیکیورٹی چیلنجز پیدا ہوسکتے ہیں۔

غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق انہوں نے ترک صدر سے مطالبہ کیا کہ شمالی شام میں جاری فوجی آپریشن فوری طور پر بند کریں، بصورت دیگر سنگین مسائل جنم لیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ شام میں ترک عسکری کارروائی کی وجہ سے جنگ سے تباہ حال اس ملک میں لوگوں کے مصائب میں مزید اضافہ ہو رہا ہے، جو مشرقی وسطیٰ کے لیے کسی خطرے سے کم نہیں ہے۔

جرمن چانسلر نے اس بات کا اقرار کرتے ہوئے کہا کہ تارکین وطن سے متعلق ترکی نے بہت مدد فراہم کی ہے، ایک اندازے کے مطابق انقرہ حکومت نے 3.6 ملین شامی مہاجرین کو پناہ دی۔

خیال رہے کہ شمالی شام میں جنگ بندی کے لیے ترکی کے ساتھ امریکی معاہدے کے بعد ترکی نے شام میں 120 گھنٹے کے لیے جنگ بند کر دی ہے۔

امریکا کے ساتھ معاہدہ: ترکی نے شام میں 120 گھنٹے کے لیے جنگ بند کر دی

گزشتہ روز امریکی نائب صدر مائیک پنس کا کہنا تھا کہ امریکا اور ترکی کے درمیان شمالی شام میں عارضی جنگ بندی کا معاہد ہوا ہے، معاہدے کے تحت ترکی وائے پی جی کو انخلا کی اجازت دے گا، ترکی پر مزید پابندیاں عائد نہیں کریں گے، مستقل جنگ بندی پر حالیہ پابندیاں بھی اٹھالی جائیں گی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں