The news is by your side.

Advertisement

ذہین بندر جو 9 سال تک ریلوے میں ملازمت کرتا رہا

پالتو جانوروں کی اپنے مالک سے وابستگی انوکھی بات نہیں اور وہ اکثر ان کے چھوٹے موٹے کام بھی کردیا کرتے ہیں، تاہم ایک ذہین بندر ایسا بھی رہا ہے جو 9 سال تک اپنے مالک کے ساتھ ریلوے میں ملازمت کرتا رہا۔

سنہ 1981 میں دونوں ٹانگوں سے معذور ایک شخص نے ایسا بندر دیکھا جو دو بیلوں کو چلاتا ہوا لے کر جارہا تھا، یہ شخص لکڑی کی ٹانگوں کی مدد سے چلا کرتا تھا۔

وہ اس بندر کو دیکھ کر بہت متاثر ہوا اور اس کے پیچھے چل پڑا، بندر بیلوں کو ایک گھر تک لے گیا۔ اس شخص نے دروازہ بجایا تو بندر کا مالک باہر نکلا۔ اس نے کہا کہ اگر وہ اپنے بندر کو اس کے ہاتھ فروخت کردے تو وہ اسے منہ مانگی قیمت دے گا۔

اس شخص کا کہنا تھا کہ وہ اپنی معذوری کی وجہ سے اس بندر کو بطور مددگار اپنے ساتھ رکھنا چاہتا ہے۔

بندر کے مالک نے اس کی معذوری دیکھتے ہوئے اسے ایسے ہی بندر دے دیا، یہ شخص ریلوے میں ملازمت کیا کرتا تھا اور اس کا کام تھا ریل کے لیے کانٹا بدلنا۔ اس نے یہ کام بندر کو بھی سکھا دیا۔

اگلے 9 سال تک بندر ٹرینوں کے لیے کانٹا بدلتا رہا اور اس دوران اس نے ذرا بھی غلطی نہیں کی۔

معذور شخص کے ساتھ بطور مددگار کام کرنے والا صرف یہ ایک بندر ہی نہیں بلکہ اکثر اوقات کتے بھی نابینا یا گونگے بہرے افراد کے مددگار ہوتے ہیں۔ ایسے کتوں کے گلے میں سبز یا نیلا بیلٹ ہوتا ہے۔

اگر آپ کو کبھی کہیں سبز یا نیلا بیلٹ پہنے کوئی کتا دکھائی دے تو یا اسے فوراً پولیس کے حوالے کریں یا پھر اس کی پیچھے چل پڑیں، کیونکہ ایسی صورت میں کتے کا معذور مالک مشکل میں ہوتا ہے اور کتا کسی کو مدد کے لیے طلب کرنے آیا ہوتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں