The news is by your side.

Advertisement

جماعت اسلامی نے آل پارٹیز کانفرنس میں شرکت سے معذرت کرلی

اسلام آباد : جماعت اسلامی نے اپوزیشن کی آل پارٹیز کانفرنس میں شرکت سے معذرت کرلی، رہنما لیاقت بلوچ نے کہا موجودہ حالات میں اے پی سی میں شرکت کو کارکن ناپسند کرتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق اپوزیشن کی آل پارٹیز کانفرنس کے لئے مولانا فضل الرحمان سرگرم ہیں ، جماعت اسلامی نے اے پی سی میں شرکت سے معذرت کرلی ، پارٹی میں مشاورت کےبعدمولانا فضل الرحمان کو آگاہ کردیاگیا ہے۔

جماعت اسلامی کے رہنما لیاقت بلوچ نے اے آر وائی نیوز سے بات چیت کرتے ہوئے کہا موجودہ حالات میں اے پی سی میں شرکت کو کارکن ناپسند کرتے ہیں۔

مولانا فضل الرحمان نے سراج الحق سے ملاقات میں آل پارٹیز کانفرنس میں شرکت کی دعوت دی تھی۔

اس سے قبل رہنما جےآئی قیصر شریف نے کہا تھا جماعت اسلامی26جون کواےپی سی میں شریک نہیں ہوگی، ماضی کی حکومتیں غلطیوں پرقوم سے معافی  مانگیں، ماضی کی حکمران جماعتیں موجودہ بحرانواں کی ذمہ دار ہیں۔

قیصرشریف کا کہنا تھا سابق حکمران بیرون ملک پڑی دولت پاکستان واپس لائیں، جب تک ماضی پرمعافی نہیں مانگتےان کیساتھ نہیں بیٹھ سکتے، عمران خان لوٹی ہوئی دولت واپس لانےکا وعدہ پوراکریں، پیپلز پارٹی اورمسلم لیگ کی احتجاج تحریک کاحصہ نہیں۔

مزید پڑھیں : مولانا فضل الرحمان کا اپوزیشن جماعتوں کے رہنماؤں کوٹیلیفون

یاد رہے جمعیت علماءاسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے اپوزیشن جماعتوں کے رہنماؤں کو ٹیلی فون کر کے انہیں کل جماعتی کانفرنس میں شرکت کی دعوت دی۔

ذرائع کے مطابق مولانا فضل الرحمان نے مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف اور نائب صدر مریم نواز سے ٹیلی فونک رابطہ کیا اور انہیں اے پی سی میں شرکت کی دعوت دی، سربراہ جے یو آئی (ف) نے چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری، عوامی نیشنل پارٹی کے سربراہ اسفند یار ولی، پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے سربراہ محمود خان اچکزئی اور نیشنل پارٹی کے رہنما حاصل بزنجو سے بھی رابطہ کیا۔

مولانا فضل الرحمان نے حکومتی اتحادی جماعت بی این پی مینگل کے سربراہ اختر مینگل سے بھی رابطے کی کوشش کی تاہم ان کے بیرون ملک ہونے کے باعث رابطہ نہ ہوسکا۔مولانا فضل الرحمان نے دعویٰ کیا کہ اختر مینگل نے انہیں اے پی سی میں شرکت کی یقین دہانی کرائی ہے۔

خیال رہے کہ مولانا فضل الرحمان کی جانب سے 26 جون کو اسلام آباد میں اپوزیشن جماعتوں کی کل جماعتی کانفرنس کا انعقاد کیا گیا ، اے پی سی میں چیئرمین سینیٹ کی تبدیلی، بجٹ منظوری روکنے سے متعلق معاملات پر مشاورت ہوگی، اس کے علاوہ حکومت مخالف تحریک اور لاک ڈاؤن کے فیصلے پر غور کیا جائےگا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں