The news is by your side.

Advertisement

دباؤ میں آکر مجرمان کو بری کرنے والے جج نے خود کو گولی مارلی

بنکاک: تھائی لینڈ کے جج نے دباؤ میں آکر مجرمان کے حق میں فیصلے دینے کے بعد خود کو گولی مارلی۔

غیر ملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق تھائی لینڈ کے صوبے یالا کی عدالت میں جمعے کے روز جج کھاناکورن نے مجرمان کے حق میں فیصلہ سنانے کے بعد اپنے سینے پر پستول رکھ کر گولی چلا دی۔

رپورٹ کے مطابق جج نے گولی مارنے سے قبل کمرہ عدالت میں موجود افراد کو مخاطب کر کے کہا کہ مجرموں کو بری کرنے کے لیے ساتھی ججوں نے دباؤ ڈالا، میں اپنے حلف کی پاسداری نہیں کرسکا اس لیے عزت سے مرنے کو ترجیح دوں گا۔

جج کی فائل فوٹو

گولی لگنے کے بعد احاطہ عدالت میں موجود افراد نے فوری طور پر جج کو اسپتال منتقل کیا جہاں ڈاکٹر نے سرجری کر کے گولی نکالی اور پھر انہیں انتہائی نگہداشت وارڈ میں داخل کرلیا۔ ڈاکٹرز کے مطابق جج کی حالت خطرے سے باہر ہے۔

تھائی لینڈ کے عوام نے جج کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہوئے عدالت کے باہر پھو ل رکھے اور کھاناکورن کو یقین دہانی کرائی کہ وہ اُن کے فیصلے اور اقدام کو اچھی طرح سے سمجھتے ہیں۔

عدالت کے ترجمان کی جانب سے جاری اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ جج نے اپنے ذاتی معاملات کی وجہ سے یہ قدم اٹھایا، کھانا کے الزامات پر ایک کمیٹی بنا دی گئی ہے جو تحقیقات کرے گی اور اگر کوئی ملوث ہوا تو اُس کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں