The news is by your side.

Advertisement

شہر قائد میں بھتا خوری کرنے والے پولیس اہلکارسلاخوں کے پیچھے

کراچی: شہر قائد کے مبینہ ٹاؤن تھانے سے تعلق رکھنے والے 2 اسٹنٹ سب انسپکٹروں سمیت 8 بھتا خورپولیس اہلکاروں کے کاروائی شروع ہوگئی ، چار کو گرفتار کرلیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق سوشل میڈیا پر مبینہ ٹاؤن تھانے کے پولیس اہلکاروں کی بھتا لیتے ہوئے ایک ویڈیو وائرل ہوئی تھی جس میں پولیس اہلکاروں کو واضح طور پر بھتا وصول کرتے دیکھا جار ہا ہے، ویڈیو وائرل ہونے کے بعد کراچی پولیس کی اعلیٰ قیادت نے ایکشن لیا اور اہلکاروں کے خلاف مقدمہ درج کر کے 4کو گرفتار کر لیا گیا، تاہم تھانے دار کے خلاف کسی قسم کی کارروائی نہیں کی گئی۔

سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہو ئی تھی جس میں دیکھا جا سکتاہے کہ مبینہ ٹاؤن تھانے کے اہلکار مختلف دکانداروں سے 100، 100 روپے وصول کر رہے ہیں۔

ویڈیومیں دیکھا اورسنا جاسکتاہے کہ پانی کے کارروبار سے منسلک ایک شخص بھتا طلب کرنے والے پولیس اہلکار کوبتاتا ہے کہ اس نے صبح ہی پولیس موبائل کو 100روپے دیے ہیں ۔ جواب میں مذکورہ پولیس اہلکار کہتاہے کہ تھا نے کی 3 موبائل ہیں اور تینوں موبائل ہفتے میں ایک بار جمعرات کوصبح اور شام کو100روپے وصول کرتی ہیں ۔

بھتہ خوری کے شکار شہری نے پورے واقعہ کی ویڈیو بنا کر سوشل میڈیا پر لوڈ کردی جو تیز ی کے ساتھ پھیل گئی۔ ویڈیو وائر ل ہونے پر اے ڈی آئی جی کراچی نے فوری نوٹس لیتے ہو ئے مذکورہ پولیس اہلکاروں کومعطل کرتے ہوئے ان کے خلاف کارروائی کے احکامات جاری کیے تھے۔

پولیس کے اعلیٰ حکام سے احکامات جاری ہونے کے بعد ایس ایچ او تھانہ مبینہ ٹاؤن نے ملوث اہلکاروں کے خلاف بھتا خوری کا مقدمہ نمبر 326/2019 درج کر لیا ۔

مقدمے کے اندارج کے بعد پولیس نے اے ایس آئی نیک محمد، اے ایس آئی دیدار سومرو، اے ایس آئی عبدالطیف اور سپاہی محمد فیصل کو گرفتار کر لیا ۔ ویڈیو میں نظر آنے والے دیگر اہلکاروں میں ہیڈ کانسٹیبل محمد اشرف، کانسٹبل نذر محمد، عبیداللہ اور شیخ خالد شامل ہیں اور ان کی گرفتاری کے چھاپہ مار کارروائی کی جارہی ہے ۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں