روس: گرل فرینڈ کا قتل کرنے والے مجرم کو 14 برس قید کی سزا Russia
The news is by your side.

Advertisement

روس: گرل فرینڈ کو قتل کرنے والے مجرم کو 14 برس قید کی سزا

ماسکو : عدالت نے گرل فرینڈ کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد بے دردی سے قتل کرنے والے نوجوان کو 14 برس قید کی سزا سناتے ہوئے جیل منتقل کرنے کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق روسی پولیس نے اپنی گرل فرینڈ کا جنسی استحصال کرنے کے بعد ٹکڑے ٹکڑے کرکے قتل کرنے والے 18 سالہ سفاک نوجوان کو گرفتار کرکے جیل منتقل کردیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ ولادی میر شاروف نامی نوجوان نے تیز دھار کلہاڑی کے متعدد وار کرکے 16 سالہ ماریہ کونووا کے ٹکڑے ٹکڑے کردیئے تھے، جس کی آخری رسومات کی ادائیگی اور تحقیقاتی کارروائی کے لیے مقتول کے ٹکڑوں کو ڈی این ٹیسٹ کے ذریعے ملایا گیا۔

روسی میڈیا کا کہنا تھا کہ درندہ صفت انسان نے 16 سالہ لڑکی کو قتل کرکے سپر مارکیٹ کے شاپنگ بیگ میں ڈال کر مقتولہ کے پڑوسی کے گھر کےباہر لگے کچرے کے ڈبّے میں ڈال آیا تھا۔

روسی پولیس کا کہنا ہے کہ دوران تفتیش ولادی میر شاروف نے دعویٰ کیا تھا کہ گرل فرینڈ کو قتل کرتے وقت میں بیمار تھا، پولیس نے بتایا کہ ملزم نے اپنے دعوے کو سچ ثابت کرنے کے لیے قتل کے بعد بیماری کی حالت میں اپنی ویڈیو بھی تھی۔

پولیس کا مؤقف ہے کہ مقتول اور مذکورہ نوجوان کے درمیان کچھ عرصہ قبل ہی سوشل میڈیا کے ذریعے دوستی ہوئی، سفاک قاتل نے دوشیزہ کو قتل کرنے سے پہلے جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا اور بعد میں اسے قتل کردیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ عدالت نے شاروف کو لڑکی کے ساتھ جنسی زیادتی کرنے اور اسے بے دردی سے قتل کرنے کے جرم میں میں 14 برس قید کی سزا سنائی ہے۔

دوشیزہ قتل کیس کی تحقیقات کے حوالے سے عدالت کو بتایا کہ مقتول ماریہ کے اعضاء ایک ہفتہ قبل ہی کچرے دان سے برآمد ہوئے تھے جو کافی حد تک خراب ہوچکے تھے۔

پولیس نے عدالت کو بتایا کہ مذکورہ ملزم نے تفتیش کے دوران ایک اور اسکول میں زیر تعلیم لڑکی کو زیادہ کا نشانہ بنایا تھا، عدالت نے دونوں فریقین کا مؤقف سننے کے بعد نوجوان قاتل کو 14 برس قید کی سزا سنا دی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں