The news is by your side.

Advertisement

خسرہ اور روبیلا کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے ویکسی نیشن کا آغاز

کراچی : نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف چائلڈ ہیلتھ (این آئی سی ایچ ) کے سابق ایگزیکٹو ڈائریکٹر پروفیسر ڈاکٹر جمال رضا نے کہا ہے کہ ہم نے پولیو کی طرح خسرہ اور روبیلا پر بھی قابو پانا ہے۔

کراچی پریس کلب میں میزلز روبیلا اورئینٹیشن سیشن کے دوران گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس مہم کا مقصد خسرہ اور روبیلا کا دنیا بھر سے خاتمہ کرنا ہے۔

پروفیسر ڈاکٹر جمال رضا نے بتایا کہ سال2019 میں ایک سو اٹھتر ملکوں میں خسرہ کی دوسری خوراک لگانا شروع کردی گئی تھی۔ دنیا بھر میں سال2019 میں 9.7 ملین کیسز خسرہ کے رپورٹ ہوئے تھے اور اس سال دنیا بھر میں خسرہ سے ایک لاکھ چالیس ہزار اموات ہوئیں۔

اب تک دنیا کے تقریباً 82 ممالک نے خسرہ اور چالیس ملکوں نے روبیلا پر قابو پالیا ہے، گزشتہ سال پاکستان میں خسرہ کے 2747 کیسز رپورٹ ہوئے اور 52 اموات ہوئیں۔

رواں سال اب تک پاکستان میں خسرہ کے 8357 کیسز سامنے آ چکے ہیں جبکہ 127 اموات رپورٹ ہوئیں، ہم پولیو کے خاتمے کے قریب پہنچ چکے ہیں، رواں سال صرف ایک کیس سامنے آیا

ان کا کہنا تھا کہ پولیو کی طرح ملک سے خسرہ اور روبیلا پر بھی قابو پانا ہے، بچوں کو پیدائشی نقائص اور معذوری سے بچانے کے لیے روبیلا کی ویکسین لازمی لگائی جائے۔

ڈاکٹر احسان اللہ نے کہا کہ حکومتی اقدامات کے باعث ہم کوویڈ کے بڑے نقصانات سے بچے ہوئے ہیں لوگ حفاظتی ویکسین کے حوالے سے منفی افواہیں پھیلاتے ہیں، عوام ان افواہوں پر توجہ نہ دیں۔

ان کا کہنا تھا کہ حفاظتی ٹیکے ہمارے بچوں کی جان بچاتے ہیں، عوام کا تعاون ہی ملک سے ان مہلک امراض کا خاتمہ کرسکتا ہے، ہماری ٹیمیں اسکولوں میں جاکر بچوں کو ویکسین لگائیں گی

انہوں نے مزید کہا کہ جو بچے ویکسین لگواچکے ہیں وہ بوسٹر کے طور پر لازمی ویکسین لگوائیں، مہم کے دوران سیکیورٹی اداروں کا مکمل تعاون حاصل رہے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں