The news is by your side.

Advertisement

ایک حادثہ بنا مائیکرو ویو کی ایجاد کا سبب

مائیکرو ویو اوون آج تقریباْ ہر گھر میں استعمال ہوتا ہے، لوگوں کی زندگیوں میں آسانی لانے والی یہ مشین ایک حادثے کے نتیجے میں معرض وجود میں آئی

حادثات زندگی کا خاصہ ہیں جو کبھی زندگی میں تباہی لاتے ہیں تو کبھی لوگوں کی زندگیاں سنوارنے کا سبب بھی بنتے ہیں آج ہم ایک ایسے ہی خوشگوار حادثے سے آپ کو آگاہ کررہے ہیں جس کے نتیجے میں ایجاد ہونے والا مائیکرو ویو آج ہر گھر کی ضرورت بن چکا ہے۔

ہوا کچھ یوں کہ ریتھیون کارپوریشن کمپنی میں انجینئر پرسی ایک روز میگنیٹر ون نامی ریڈار ڈیوائس پر کام کر رہا تھا کہ اس کی جیب میں رکھی چاکلیٹ پگھلنا شروع ہوگئی، اسے اندازہ ہوگیا کہ ایسا ان شعاعوں کی وجہ سے ہورہا ہے جو اس ڈیوائس سے خارج ہورہی ہیں۔

پرسی نے پھر مائیکرو ویو میں رکھی گئی دنیا کی پہلی غذا پاپ کارن پر تجربہ کیا اور وہ بھی کامیاب رہا، نتائج کو سامنے رکھ کر مائیکرو ویوز شعاعوں کو ایک محفوظ ڈبے میں بند کرنے کا سوچا گیا۔

آٹھ اکتوبر 1945میں پرسی نے سند ایجاد کے لیے درخواست دائر کردی جس کے بعد پرسی نے پہلے مائیکرو ویو اوون کی نمائش کی جسے ابتدائی طور پر ریڈار رینج کا نام دیا گیا تھا اور اس کا سائز ایک ریفریجریٹر کے برابر تھا۔

1967 میں مائیکرو ویو کو مارکیٹ میں پہلی بار فروخت کے لیے پیش کیا گیا

Comments

یہ بھی پڑھیں