The news is by your side.

Advertisement

شہزادہ محمد بن سلمان کا کورونا ویکیسن سے متعلق اہم اعلان

سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے کہا کہ جی ٹوئنٹی کے رکن ممالک نے سعودی عرب کی قیادت میں یکجہتی پیدا کر کے کورونا وبا کا مقابلہ کیا۔

شہزادہ محمد بن سلمان نے جی 20 کے اختتامی بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ بین الاقوامی معیشت کو خسارے سے بچانے کےلیے 11 ٹریلین ڈالر سے زیادہ فراہم کیے گئے۔

شہزادہ محمد بن سلمان نے کہا کہ غریب ترین ممالک کے ساتھ تعاون کیا گیا، قرضوں کی ادائیگی معطل کر دی گئی۔
سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے بتایا کہ ایک ارب سے زیادہ لوگوں کو گروپ کی جانب سے قرضے معطل کرنے کے پروگرام سے فائدہ پہنچا، جون 2021 تک قرضوں کی سروسز کی ادائیگی معطل رہے گی۔

انہوں نے کہا کہ سعودی عرب کورونا ویکسین فراہم کرنے کے لیے جدوجہد جاری رکھے گا۔ سربراہ کانفرنس نے سرکلر کاربن پروجیکٹ کی توثیق کر دی۔ ڈبلیو ٹی او کی اصلاح کے لیے سعودی فارمولے کی بھی منظوری دے دی۔

محمد بن سلمان نے توجہ دلائی کہ سعودی عرب نے کورونا ویکسین کی تیاری کے لیے500ملین ڈالر پیش کیے جبکہ انسانی جانوں کی سلامتی کے لیے تمام اقدامات کیے گئے اور بے حد غریب زمروں میں شامل افراد کی مدد کی گئی۔

ولی عہد محمد بن سلمان نے کہا کہ ہم نے کورونا وائرس سے نمٹنے کےلیے فرنٹ لائن پر کام کرنے والوں کے لیے ضروری سامان فراہم کیا، وبا کے آغاز میں 21 ارب ڈالر سے زیادہ کا فوری فنڈ فراہم کیا گیا۔

گروپ میں شامل ممالک کے عوام اور ان کی معیشتوں کو وبا کے اثرات سے بچانے کے لیے ہنگامی اقدامات کیے۔عالمی معیشت کو کھڑا رکھنے کے لیے 11 ٹریلین ڈالر سے زیادہ لگائے۔

انتہائی خطرات سے دوچار ملکوں کو ہنگامی امداد فراہم کی۔ ایک ارب سے زیادہ آبادی والے غریب ترین ملکوں کے قرضوں کا بوجھ ہلکا کرنے کے لیے 14 ارب ڈالر سے زیادہ فراہم کیے۔

ترقیاتی بینکوں، عالمی مالیاتی فنڈ اور عالمی بینک کے ذریعے 300 ارب ڈالر سے زیادہ محدود آمدنی والے ملکوں کو فراہم کیے گئے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں