The news is by your side.

Advertisement

اسامہ قتل: انتظامیہ نے لواحقین کے تمام مطالبات منظور کر لیے

اسلام آباد: ڈی چوک میں مقتول اسامہ ستی کے لواحقین کے احتجاج پر انتظامیہ نے ان کے تمام مطالبات منظور کر لیے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق پولیس اہل کاروں کے ہاتھوں قتل ہونے والے نوجوان اسامہ ستی کے لواحقین کی جانب سے شدید احتجاج پر انتظامیہ نے ان کے تمام مطالبات منظور کر لیے۔

انتظامیہ نے اسامہ ستی قتل کیس میں جوڈیشل کمیشن تشکیل دے دیا، نوٹیفکیشن بھی جاری ہو گیا، قبل ازیں، ڈی سی اسلام آباد نے مظاہرین کے تمام مطالبات منظور کرنے کا اعلان کر دیا تھا۔

ڈی سی اسلام آباد حمزہ شفقات نے کہا کہ جوڈیشل کمیشن کے لیے اسلام آباد ہائی کورٹ کو کیس بھیج دیا گیا ہے، مطالبات کے مطابق قتل میں ملوث اہل کاروں کو برطرف کر دیا گیا ہے، اور تفتیشی افسران کی تبدیلی کا مطالبہ بھی پورا کر دیا گیا ہے۔

وفاقی پولیس کا اسامہ ستی کے قتل میں ملوث 5 اہلکاروں کیخلاف بڑا ایکشن

واضح رہے کہ آج اسامہ کے قتل کی تحقیقات کرنے والے تفتیشی افسر انچارج ہومی سائیڈ یونٹ صدر سرکل کو ہٹا دیاگیا ہے، ان کی جگہ انسپکٹر عبدالجبار کو انچارج ہومی سائیڈ یونٹ تعینات کر دیاگیا ہے۔

وفاقی پولیس نے بڑا ایکشن لیتے ہوئے آج واقعے میں ملوث 5 اہل کاروں کو پولیس سروس سے بر طرف کر دیا ہے، برطرف ہونے والوں میں سب انسپکٹر افتخار، کانسٹیبل مصطفیٰ، شکیل، مدثر اور سعید شامل ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں