The news is by your side.

نیب کی گلیات ڈویلپمنٹ اتھارٹی میں مالی بے ضابطگیوں کی تحقیقات کا آغاز

ایبٹ آباد: نیب نے گلیات ڈویلپمنٹ اتھارٹی میں مالی بے ضابطگیوں کی تحقیقات کا آغاز کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق قومی احتساب بیورو نے مالی بے ضابطگیوں کی تحقیقات شروع کرتے ہوئے جی ڈی اے سے تمام معاہدوں کی تفصیلات طلب کر لی ہیں۔

نیب کا کہنا ہے کہ جی ڈی اے نے پارکنگ پلازہ اراضی کی کم قیمت پر الاٹمنٹ کی، ایوبیہ چیئر لفٹ کو غیر قانونی طور پر مورال کمپنی کو دیا گیا، اور نتھیاگلی میں زپ لائن کا ٹھیکہ غیر قانونی طور پر دیا گیا اور اس کی مدت بھی بڑھائی گئی۔

نیب کے مطابق چھانگلہ گلی میں 11 کنال اراضی کے حوالے سے 25 ملین رشوت لی گئی، ٹھنڈیانی میں 300 کنال اراضی کو 99 سال کے لیے اصل قیمت کے بغیر الاٹ کی گئی۔

نیب تحقیقات کے مطابق گلیات کے ماسٹر پلان کے لیے 20 سال کا معاہدہ 25 ملین روپے میں کیا گیا، یہ معاہدہ غیر قانونی طور پر دوبارہ دیا گیا، اور جی ڈی اے ملازم نے بطور مڈل مین 16 کنال اراضی فروخت کر کے کروڑوں روپے کمائے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں