The news is by your side.

Advertisement

بجلی بحران پر بوسنیا کے تجربات سے فائدہ اٹھائیں گے، نواز شریف

سرائیوو: وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ بجلی کے بحران کے حل کے لیے بوسنیا کے تجربات سے فائدہ اٹھائیں گے کول انرجی اور ہائیڈرو انرجی کے حصول میں مشترکہ اقدامات کی ضرورت ہے۔

وزیراعظم پاکستان نواز شریف بوسنیا کے وزیر اعظم کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔ انہوں نے اپنے پُرتپاک استقبال پر بوسنیا کے وزیر اعظم کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان اور بوسنیا توانائی، دفاع اور تجارت سمیت دیگر اہم شعبوں میں ایک دوسرے کے ساتھ تعاون کے ذریعے اپنے عوام کی فلاح کے لیے انقلابی قدم اٹھا سکتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان بجلی کے بحران سے نمٹنے کے لیے بوسنیا کے تجربات سے مستفید ہونا چاہتا ہے اور کوئلہ اور پانی کے ذریعے بجلی کے پیداواری صلاحیتوں میں اضافے کا متمنی ہے تاکہ پاکستان بجلی پیدا کرنے کی صنعت میں خود کفیل ہو پائے۔

اس موقع پر وزیراعظم نواز شریف نے اپنے ہم منصب کے ساتھ معیشت کی ترقی کے لیے تجارتی معاہدوں اور عوام کے خوشحالی کے لیے ترقیاتی کاموں میں معاونت کے عزم کا اظہار بھی کیا اور معاشی ترقی کے لیے کئی پروجیکٹس میں دلچسپی ظاہر کی۔

وزیراعظم پاکستان نے دفاع، معیشت اور انرجی کے شعبوں میں دو طرفہ تعاون کی ضرورت زور دیتے ہوئے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں موثر کردار ادا کرنے کا اعادہ کیا اور خطے میں قیام امن کے لیے مل کام کرنے پر بوسنیا کی حکومت کا شکریہ ادا کیا۔

قبل ازیں بوسنیا کے پارلیمانی گروپ سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان میں داعش کا کوئی وجود نہیں،ہم نے القاعدہ اور ٹی ٹی پی کے خطرے کو موثر طور پر نمٹا یا ہے اور دہشت گردی کے خلاف جنگ میں بھاری قیمت بھی چکائی ہے۔


یہ پڑھیں: بوسنیا: وزیر اعظم نواز شریف کے اعزاز میں استقبالیہ تقریب


خیال رہے کہ وزیر اعظم نواز شریف بوسنیا کے تین روزہ سرکاری دورے پر آج پہنچے ہیں جہاں افواج کے چاق و چوبند دستے نے وزیر اعظم کو سلامی دی۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں