The news is by your side.

Advertisement

پاکستان میں کورونا کیسز کی شرح میں اضافے کے تناظر میں اہم فیصلے

اسلام آباد : کورونا کیسز میں اضافے کے پیش نظر این سی او سی نے ملک میں ماسک کے استعمال پر سخت عملدرآمد اور تجارتی مقامات کو رات 10 بجے بند کرنے کی پالیسی دوبارہ نافذ کرنے کا فیصلہ کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر اسد عمر کی زیر صدارت این سی او سی کا اجلاس ہوا، جس میں وفاقی، صوبائی متعلقہ حکام نے کورونا صورتحال اور حکومتی اقدامات پر بریفنگ دی جبکہ کورونا کیسز کی شرح میں اضافے کے تناظر میں اہم فیصلے کئے گئے۔

این سی او سی نے ملک میں ماسک کے استعمال پر سخت عملدرآمد کا فیصلہ کرتے ہوئے کورونا ایس او پیز پر سختی سے عمل درآمد کی ہدایت کردی۔

نیشنل کمانڈ اینڈ کنٹرول سینٹر نے کہا کہ کورونا ہاٹ اسپاٹس پراسمارٹ لاک ڈاؤن پالیسی جاری رہے گی تاہم 50 فیصد عملے کی ورک فرام ہوم پالیسی کا فیصلہ صوبوں کی مشاورت سے ہوگا۔

این سی او سی نے اسلام آباد میں 50 فیصد اسٹاف گھر سے کام کی پالیسی فی الفور نافذ کرنے اور تجارتی مقامات کورات 10بجے بند کرنے کی پالیسی دوبارہ سے نافذ کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

اجلاس میں ملک بھر میں پارکس شام 6 بجے تک بند کرنے فیصلہ کرتے ہوئے انڈور شادی تقریبات اورکھانوں کی اجازت واپس لینے سمیت 15مارچ سے سینماز اور مزارات کھولنے کا فیصلہ بھی واپس لے لیا گیا تاہم آؤٹ ڈور کھانوں ، ٹیک اوے کی سہولت میسر رہے گی۔

این سی اوسی نے کہا آؤٹ ڈور میں 300 سے زائد افراد کے جمع ہونے پر پابندی عائد ہوگی ، نئی نافذ کی گئی تمام پابندیوں کا جائزہ 12 اپریل کو دوبارہ لیا جائے گا، تاہم شہروں اور اضلاع میں ایس اوپیز کے اطلاق کیلئے صوبے خود مختار ہوں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں