The news is by your side.

Advertisement

اے پی سی کوکامیاب بنانے کی بھرپور کوشش کریں گے، مشترکہ پارلیمانی پارٹی اجلاس میں اتفاق

اسلام آباد : قائد حزب اختلاف شہبازشریف کہتے ہیں مشترکہ پارلیمانی پارٹی اجلاس میں اتفاق کیاگیاہے کہ پارٹیوں کے سربراہ اپنے وفود کے ساتھ آل پارٹیز کانفرنس میں شرکت کریں گے اور اے پی سی کوکامیاب بنانے کی بھرپور کوشش کریں گے ۔

تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈرشہبازشریف کی زیر صدارت متحدہ اپوزیشن جماعتوں کی مشترکہ پارلیمانی پارٹی کا اجلاس جاری ہے، اپوزیشن اراکین کمیٹی روم نمبر 2 میں اجلاس میں موجود ہیں۔

اجلاس میں اپوزیشن جماعتیں بجٹ پر حکمت عملی پر بات کی گئی جبکہ اپوزیشن کی طرف سے بجٹ میں کٹوتی کی تحاریک پیش کی گئیں۔

قائد حزب اختلاف شہبازشریف نے کہا مشترکہ پارلیمانی پارٹی اجلاس میں اتفاق کیاگیا ہے کہ پارٹیوں کے سربراہ اپنے وفود کے ساتھ آل پارٹیز کانفرنس میں شرکت کریں گے اور اے پی سی کوکامیاب بنانے کی بھرپور کوشش کریں گے۔

اجلاس میں شہبازشریف کا کہنا ہے متحدہ اپوزیشن کی اے پی سی میں شمولیت کا صرف ایک مقصد ہے، آئی ایم ایف کے بنائے ہوئے عوام دشمن بجٹ کو مسترد کرتے ہیں ، عوام کوتباہ معاشی حالت اور مہنگائی کےدلدل سے نکالنا ہے۔

شہبازشریف نے کہا نندی پور ریفرنس میں پرویز اشرف کی درخواست مسترد کی گئی، ریفرنس میں بابر اعوان کو بری کیا گیا، اسلام آباد:سلیکٹڈاحتساب ہے، نیب کامعیارسب نےدیکھ لیا۔

بلاول بھٹو مشترکہ پارلیمانی پارٹی اجلاس میں شرکت کے لیےپہنچ گئے، اجلاس میں تمام سیاسی جماعتوں کے اراکین قومی اسمبلی نوید قمر، پرویزاشرف، خورشید شاہ،نوابزادہ افتخار، ناز بلوچ اور رفیق جمالی، مہیش ملانی، خورشیدجونیجو، خالدلونڈ، نعمان شیخ، شازیہ مری اور شگفتہ جمانی ، عابد بھیو، شمیم پنہور، شاہدہ رحمانی، یوسف تالپور اور مسرت رفیق مہیسر بھی شریک ہیں۔

بلاول بھٹو زرداری نے متحدہ پارلیمانی پارٹیوں کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہم عوام دشمن بجٹ کو مسترد کرتے ہیں، عوام دشمن بجٹ کی مخالفت میں ووٹ دیں گے ، دو معزز ارکان کےپروڈکشن آرڈر جاری نہیں ہوئے ، حکومت دھاندلی سے بجٹ منظورکرانا چاہتی ہے۔

پی پی چیئرمین کا کہنا تھا فضل الرحمان صاحب ہمیشہ اپوزیشن کو ملاتے ہیں، نوجوان ہوں زبان دی ہے،اے پی سی میں شرکت کروں گا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں