The news is by your side.

گوگل نے اپنا ڈوڈل اماراتی شاعرہ کے نام کر دیا

گوگل نے اپنا ڈوڈل اماراتی شاعرہ عوشہ السویدی کے نام کر دیا۔

عرب نیوز کے مطابق انٹرنیٹ کی دنیا کے سب سے بڑے سرچ انجن گوگل نے اپنے ڈوڈل پر اماراتی شاعرہ عوشہ بنت خلیفہ السویدی کو خراج عقیدت پیش کیا۔

ڈوڈل میں خاتون شاعرہ کو عرب خطے کے روایتی لباس میں دکھایا گیا ہے، جن کا چہرہ بھی خاص بدوی انداز سے ڈھانپا گیا ہے، گوگل کے اس اقدام نے عرب خطے میں ادب سے منسلک خواتین کی حوصلہ افزائی کی۔

فتاۃ الخلیج (خلیج کی لڑکی) کی عرفیت سے معروف عوشہ السویدی کو جزیرہ نما عرب کے خانہ بدوش بدویوں میں روایتی شاعری کے ساتھ ساتھ بہترین نظمیں اور غزلیں لکھنے کے حوالے سے جانا جاتا ہے۔

عوشہ السویدی یکم جنوری 1920 کو العین میں پیدا ہوئیں، انھوں نے 15 سال کی عمر میں اس وقت قومی سطح کی شہرت حاصل کی، جب خطے میں عام طور پر ادب کے شعبے میں مردوں کی اجارہ داری تھی۔

امارارتی شاعرہ کی بہت سی نظمیں خلیج عرب اور صحرائی مناظر کے ساتھ ساتھ متحدہ عرب امارات میں ان کے اپنے تجربات سے بھی متاثر نظر آتی ہیں، جو محبت، حکمت، حب الوطنی اور پرانی یادوں جیسے موضوعات پر مبنی ہیں۔

عوشہ کی بہت سی نظمیں مشہوراماراتی اور عرب فن کاروں نے نغموں میں استعمال کر کے شہرت حاصل کی، 2011 میں ان کی خدمات کو قومی سطح پر تسلیم کیا گیا، ان کے نام سے ایک سالانہ ایوارڈ کا اجرا بھی کیا گیا ہے۔ عوشہ السویدی کا 98 برس کی عمر میں 2018 میں انتقال ہو گیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں