The news is by your side.

دوا ساز کمپنیوں نے 5 جنوری سے احتجاجی مظاہروں کی دھمکی دے دی

لاہور: پاکستان میں وفاقی حکومت کی غلط پالیسیوں کے باعث جان بچانے والی ادویات کا شدید بحران پیدا ہو گیا ہے، فارما انڈسٹری کے مسائل حل نہ ہونے کی صورت میں دوا ساز کمپنیوں کی جانب سے احتجاجی مظاہروں کی دھمکی سامنے آ گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق شوگر کے مریضوں کی انسولین مارکیٹ سے غائب ہو گئی ہے، اسی طرح گردوں اور دل کے امراض کی بہت سے ادویات بھی مارکیٹ میں دستیاب نہیں۔

پاکستان ڈرگ لائر فورم کے صدر نور مہر نے بتایا کہ بہت سی ادویات کراچی پورٹ اور لاہور ڈرائی پورٹ اور ملک کی دیگر مختلف پورٹس پر پڑی ہوئی ہیں، جنھیں تاحال کلیئر نہیں کروایا جا سکے۔

نور مہر کے مطابق پاکستان میں ادویات کا 91 فی صد خام مال باہر کے ممالک سے امپورٹ کیا جاتا ہے۔

انھوں نے کہا کہ فارما انڈسٹری کے ملازمین مجبوراً سڑکوں پر احتجاج کرنے پر مجبور ہو چکے ہیں، اگر فارما انڈسٹری اور فارماسسٹوں کے مسائل حل نہ کیے گئے تو 5 جنوری سے پورے پاکستان میں فارماسوٹیکل فرمز مجبوراً بند کر کے احتجاجی مظاہرے کیے جائیں گے۔

نور مہر نے کہا کہ بہت ساری فارماسوٹیکل فرمز بند ہونے کے قریب تر پہنچ گئی ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں