The news is by your side.

Advertisement

پی آئی اے کے ملازم کی حادثاتی موت، ادارے سے ملی رقم والد نے لے لی، بیوہ محروم

اسلام آباد: پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائن (پی آئی اے) کے ملازم کی حادثاتی موت کے بعد ملازم کی بیوہ اپنا حق لینے کے لیے عدالت پہنچ گئیں، ادارے سے ملی 23 لاکھ روپے کی رقم ملازم کے والد وصول کرچکے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائن (پی آئی اے) کے ملازم فراز احمد کی حادثاتی موت کے بعد ادارے سے ملی 23 لاکھ کی رقم والد نے وصول کرلی جس کے بعد بیوہ اور بیٹی اپنا حق حاصل کرنے سپریم کورٹ پہنچ گئیں۔

عدالت میں دائر کردہ درخواست میں ملازم کی بیوہ نے استدعا کی ہے کہ شوہر کی جگہ نوکری اور بچی کے تعلیمی اخراجات بھی ادا کیے جائیں۔

درخواست گزار کے وکیل کا کہنا ہے کہ وراثت میں والد کا شرعی حق بیوہ کو دیا جائے۔

پی آئی اے کے وکیل کا کہنا ہے کہ دعویٰ پرانے قانون کے تحت دائر کیا گیا لہٰذا اس کی داد رسی نہیں ہوسکتی، سپریم کورٹ نے استفسار کیا کہ درخواست پہلے دی گئی تھی تو فیصلہ پرانے قانون کے تحت ہوگا یا نئے قانون کے تحت جس پر بیوہ کے وکیل نے کہا کہ عدالتی نظیر موجود ہے کہ فیصلہ پرانے قانون کے تحت ہوگا۔

جسٹس سجاد علی شاہ نے کہا کہ پرانا قانون موجود ہی نہیں تو اسے کیسے نافذ کرنے کا حکم دیں، حل یہ ہے کہ پی آئی اے کو درخواست کا فیصلہ کرنے کی ہدایت دیں۔ فیصلہ خلاف آنے پر عدالت سے رجوع کا حق حاصل ہو جائے گا۔

بیوہ کے وکیل نے تجویز سے اتفاق کرتے ہوئے کہا کہ ادارہ فیصلہ حق میں کردے تو مسئلہ ویسے ہی حل ہو جائے گا۔

عدالت نے حکم دیا کہ پی آئی اے بیوہ کی درخواست کا فیصلہ 2 ماہ میں کرے، تحقیق کی جائے کہ صرف ایک وارث کو 23 لاکھ کیسے ادا ہوئے؟ متوفی کے والد سے شرعی حق سے زائد رقم واپس لے کر بیوہ کو دی جائے۔

سپریم کورٹ نے بیوہ کی درخواست کا فیصلہ کرنے کا حکم دیتے ہوئے درخواست نمٹا دی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں