The news is by your side.

Advertisement

وزیر اعظم کا گزشتہ ادوار میں خرچ کی گئی تمام رقم ریکور کرنے کا فیصلہ

اسلام آباد: وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا، اجلاس میں گزشتہ حکومتوں کے میڈیکل اور کیمپ آفسز کے اخراجات کی تفصیل سمیت 14 نکاتی ایجنڈا زیر غور آیا۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا، اجلاس میں گزشتہ حکومتوں کے میڈیکل اور کیمپ آفسز کے اخراجات کی تفصیل پیش کی گئی۔

وفاقی کابینہ کے اجلاس میں اس حوالے سے پیش کی جانے والی دستاویز اے آر وائی نیوز نے حاصل کرلی۔ دستاویزات کے مطابق کیمپ آفسز، سیکیورٹی اور میڈیکل کے نام پر قوم کے اربوں رپوے لٹائے گئے۔

دستاویز کے مطابق سابق وزیر اعظم نواز شریف نے 4 ارب 31 کروڑ 83 لاکھ سرکاری خزانے سے خرچ کیے، سابق صدر آصف زرداری نے 3 ارب 16 کروڑ 41 لاکھ روپے خرچ کیے۔ سابق وزیر اعلیٰ شہباز شریف نے 8 ارب 72 کروڑ 69 لاکھ سرکاری خزانے سے خرچ کیے۔

دستاویز کے مطابق سابق وزیر اعظم شاہد خاقان نے اپنے دور حکومت میں 35 کروڑ روپے خزانے سے خرچ کیے، سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی نے 24 کروڑ، راجہ پرویز اشرف نے 32 کروڑ جبکہ سابق صدر مملکت ممنون حسین نے 30 کروڑ روپے سرکاری خزانے سے خرچ کیے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم نے گزشتہ ادوار میں ہونے والے اخراجات پر تشویش کا اظہار کیا اور تمام رقم ریکور کرنے کا فیصلہ کیا۔

کابینہ اجلاس میں رولز آف بزنس 1973 کے شیڈول 1 میں ترمیم پر بات چیت ہوئی، کابینہ نے ای کامرس پالیسی فریم ورک کی منظوری دی جبکہ پی اے ایف بیس شہباز و گرد و نواح کو جیکب آباد کنٹونمنٹ ایریا کی منظوری بھی اجلاس کے ایجنڈے میں شامل تھی۔

اجلاس میں زرعی ترقیاتی بینک کی جانب سے وفاقی کابینہ کو بریفنگ دی گئی۔ نیو ٹیک کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر کی منظوری اور گورنر ہاؤس سمیت سرکاری عمارتوں کے مستقبل کا فیصلہ بھی اجلاس کے ایجنڈے میں شامل رہا۔

وفاقی کابینہ نے اپنے گزشتہ فیصلوں پر عملدر آمد کا جائزہ بھی لیا۔ اجلاس میں پولی تھین شاپنگ بیگز کے مٹیریل کی درآمد اور سیل پر پابندی پر غور کیا گیا۔ اجلاس میں اسلام آباد میں پلاسٹک بیگز پر پابندی عائد کرنے کی منظوری دے دی گئی۔

اجلاس میں وفاقی کابینہ نے توصیف ایچ فاروق کو چیئرمین نیپرا (نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی) تعینات کرنے کی منظوری دی۔ ایجنڈے میں ریکوری آف مورگیج بیکڈ سیکیورٹی آرڈیننس 2019، قائم مقام چیئرمین ایکسپورٹ پروسیسنگ زون اتھارٹی کا تقرر اور اسلام آباد ہیلتھ کیئر سہولت بل 2019 کی اصولی منظوری بھی شامل تھی۔

اس سے قبل 9 جولائی کو ہونے والے اجلاس میں سابق وزیر اعظم نواز شریف اور سابق صدر آصف زرداری کے دور میں اخراجات پر تفصیلی بریفنگ دی گئی تھی۔

بریفنگ میں بتایا گیا تھا کہ نواز شریف کے دور میں 1421.5 ملین (ایک ارب 42 کروڑ 15 لاکھ) روپے غیر ملکی دوروں پر خرچ ہوئے، زرداری کے غیر ملکی دوروں پر 183.5 ملین (18 کروڑ 35 لاکھ) روپے خرچ ہوئے۔

اجلاس کے دوران وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ سابق حکمران قومی خزانے سے پر تعیش دورے کرتے رہے، ملک اور قوم کو غیر ملکی دوروں سے کیا حاصل ہوا۔

وزیر اعظم نے سابق ادوار میں اڑائی دولت کے ایک ایک پیسے کا حساب لینے کے عزم کا اظہار بھی کیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں