The news is by your side.

Advertisement

اسمبلی میں شور کی اصل وجہ احتساب سے بچنے کے لیے حکومت پر دباؤ ڈالنا ہے: وزیرِ اعظم

اسلام آباد: وزیرِ اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ آج اسمبلی سے شور اٹھ رہا ہے کہ جمہوریت خطرے میں ہے، شور کی اصل وجہ احتساب سے بچنے کے لیے حکومت پر دباؤ ڈالنا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیرِ اعظم عمران خان سے ’قومی سیکورٹی ورکشاپ بلوچستان‘ کے شرکا نے ملاقات کی، شرکا نے قومی نوعیت کے معاملات اور مسائل سے وزیرِ اعظم کو آگاہ کیا۔

قیام پاکستان کے وژن سے کنارہ کشی مسائل کی اصل وجہ ہے، ماضی میں بلوچستان کو وفاق اور صوبائی حکومت دونوں نے نظر انداز کیا۔

عمران خان وزیرِ اعظم پاکستان

وزیرِ اعظم نے کہا کہ موجودہ حکومت نے نئے پاکستان کا تصور دیا ہے، ریاستِ مدینہ سے مراد سنہری اصول ہیں، ان اصولوں کی بنیاد پر مسلمانوں نے دنیا کی امامت سنبھالی، معاشرہ تب ترقی کرتا ہے جب قانون کی عمل داری اور یکساں اطلاق ہو، بد قسمتی سے پاکستان میں طاقت ور اور کم زور کے لیے مختلف قوانین ہیں۔

قومی اسمبلی میں اپوزیشن رہنماؤں کی ملاقات کے حوالے سے وزیرِ اعظم کا کہنا تھا کہ ان کا شور دراصل احتساب سے بچنے کے لیے دباؤ ڈالنا ہے۔

انھوں نے کہا ’الزامات کا جواب دینا سیاسی لیڈر پر فرض ہو جاتا ہے، ڈکٹیٹر شپ کے بر عکس جمہوریت میں لیڈر جواب دہ ہوتا ہے، قیام پاکستان کے وژن سے کنارہ کشی مسائل کی اصل وجہ ہے، ماضی میں بلوچستان کو وفاق اور صوبائی حکومت دونوں نے نظر انداز کیا۔‘

وزیرِ اعظم نے مزید کہا کہ بلوچستان کی معدنی دولت پورے ملک کو خوش حال بنا سکتی ہے، سی پیک سے بلوچستان میں ترقی کی نئی راہیں کھلیں گی، بلوچستان میں اسکل ڈویلپمنٹ کی ضرورت ہے، چین سے مدد لے رہے ہیں، اسکل ڈویلپمنٹ کے ساتھ ٹیکنالوجی ٹرانسفر حصول پر بھی خصوصی توجہ ہے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ بلوچستان میں پینے کے پانی کی کمی کےحل کے لیے مختلف تجاویز زیرِ غورہیں، نوکریوں میں بلوچستان کے کوٹے پر بھی عمل درآمد یقینی بنایا جائے گا، کوئٹہ میں کینسر کے علاج کے لیے کوششیں کی جا رہی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  ’جو کرنا ہے جلدی کیجیے‘ اپوزیشن رہنماؤں کے اجلاس میں سعد رفیق کا کسی سے فون پر رابطہ

انھوں نے کہا ’موجودہ حکومت نے ہائیر ایجوکیشن کا بجٹ بڑھایا ہے، ملک کی ترقی کے لیے تعلیم اور ٹیکنیکل ایجوکیشن انتہائی اہم ہے۔‘

وزیرِ اعظم نے کہا کہ ملکی معاشی استحکام و ترقی کے لیے خصوصی اقدامات کیے گئے ہیں، برآمدات بڑھ رہی ہیں اور درآمدات میں کمی آ رہی ہے، بیرون ملک سے زرِ مبادلہ کی قانونی ترسیل پر خصوصی توجہ دے رہے ہیں، حکومتی اقدامات سے ملک میں سرمایہ کاری بڑھ رہی ہے۔

عمران خان نے حکومتی منصوبوں میں 50 لاکھ گھروں کی تعمیر کا منصوبہ سب سے اہم قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس منصوبے سے معاشی ترقی کا عمل تیز، اور نوجوانوں کے لیے روزگار میسر آئے گا، ملک میں گھروں کی کمی کو پورا کرنے میں یہ منصوبہ سنگِ میل ثابت ہوگا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں