The news is by your side.

Advertisement

قومی حج پالیسی 2019 منظور، سبسڈی نہ دینے کا فیصلہ، سہولیات پر سمجھوتا نہ کرنے کا اعلان

اسلام آباد: وزیر  اعظم عمران خان نے کابینہ پر واضح کیا ہے کہ رواں برس حجاج کو کوئی مسئلہ درپیش نہیں ہونا چاہیے، سہولتوں پرکسی قسم کا  سمجھوتا نہیں کیا جائے گا۔ 

تفصیلات کے مطابق آج وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا، جس میں قومی حج پالیسی 2019 کی منظوری دی گئی، اس برس سبسڈی نہ دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

اجلاس میں وفاقی وزیرمذہبی امورنورالحق قادری نےوفاقی کابینہ کو بریفنگ دی، جس کے مطابق رواں سال ایک لاکھ 84 ہزار سے زائد پاکستانی فرئضہ حج ادا کرسکیں گے، سرکاری ٹور  آپریٹرز کاحج کوٹہ 60 فیصد ہوگا.

کابینہ نے پرائیویٹ ٹور آپریٹرز کا کوٹہ 40 فیصد کرنے کی منظوری دی ہے، حج درخواستیں آئندہ ماہ سے وصول کی جائیں گی، شمالی زون کے لئےاخراجات4لاکھ37ہزار روپے جنوبی زون کیلئےاخراجات4لاکھ28 ہزار ہوں گے۔

ذرائع کے مطابق حج پالیسی2019 میں کسی قسم کی سبسڈی نہ دینے کا فیصلہ  کیا گیا ہے، ساتھ ہی کسی قسم کی شکایت پرسخت کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

مزید پڑھیں: وفاقی کابینہ نے نئی ویزہ پالیسی میں نرمی کی منظوری دے دی

اس بار 80 سال سے زائد عمر کے پاکستانی شہری بغیر قرعہ اندازی حج ادا کریں گے، 4 لاکھ 36 ہزار سے 4 لاکھ 26 ہزار تک کے اخراجات کی بھی منظوری دی گئی ہے.

وزیر اعظم نے واضح کیا کہ ہے کہ حجاج کو کسی قسم کا مسئلہ درپیش نہیں ہونا چاہیے، کابینہ اجلاس میں ارباب شہزاد کو حج 2019 کا سپر وائزر لگانے کی منظوری دی گئی.

یاد رہے کہ آج وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کے اجلاس میں  نئی ویزہ پالیسی میں نرمی کی منظوری دے گئی،  ابتدا میں 60 ممالک کوارائیول، آن انٹری ویزہ ملے گا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں