The news is by your side.

Advertisement

مذاکرات کو کبھی بھی کمزوری کی علامت نہیں سمجھنا چاہیئے: وزیر اعظم

اسلام آباد: وزیر اعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ مذاکرات اور سفارت کاری سے تنازعات کے حل پر یقین ہے، مذاکرات سے حل کو کبھی بھی کمزوری کی علامت نہیں سمجھنا چاہیئے۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ ملک اور قوم کی سلامتی کے لیے پر عزم اور غیر متزلزل ہیں۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ مذاکرات اور سفارت کاری سے تنازعات کے حل پر یقین ہے، مذاکرات سے حل کو کبھی بھی کمزوری کی علامت نہیں سمجھنا چاہیئے۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے بھارت کو بتا دیا جب 27 فروری 2019 کو اس نے حملے کا انتخاب کیا، قوم کی حمایت سے افواج ہر سطح پر جارحیت کا جواب دیں گی اور غالب رہیں گی۔

خیال رہے کہ آج بھارت کے خلاف آپریشن سوئفٹ ریٹارٹ کے 3 سال مکمل ہوگئے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے اپنے پیغام میں کہا ہے کہ آپریشن سوئفٹ ریٹارٹ میں پاکستان نے بھارت کی ناکام جارحیت کا بھرپور جواب دیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ پاک فضائیہ کی جانب سے بھارت کے 2 جنگی طیارے مار گرانا بڑی کامیابی تھی، پاک بحریہ نے سمندر میں بھارتی آبدوز کا سراغ بھی لگایا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں