وزیر اعظم نے چشمہ میں سی 3 پاور پلانٹ کا افتتاح کردیا -
The news is by your side.

Advertisement

وزیر اعظم نے چشمہ میں سی 3 پاور پلانٹ کا افتتاح کردیا

اسلام آباد: وزیر اعظم نے چشمہ میں سی 3 پاور پلانٹ کا افتتاح کردیا۔ وزیر اعظم کی آمد کے موقع پر میانوالی سرگودھا روڈ کو ہر قسم کی ٹر یفک کے لیے بند کردیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم نے چشمہ نیو کلیئر پاور پراجیکٹ 3 کا افتتاح کیا۔ اس موقع پر ان کے ہمراہ وفاقی وزیر برائے پانی و بجلی خواجہ آصف اور وزیر اعظم کے مشیر خصوصی برائے امور خارجہ سرتاج عزیز بھی موجود تھے۔

nawaz-post

یہ پلانٹ پاکستان اٹامک انرجی کمیشن اور چائنہ نیشنل نیو کلیئر کارپوریشن کے تعاون سے تیار کیا گیا ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ پاکستان اٹامک انرجی کمیشن اور چائنہ نیشنل نیو کلیئر کارپوریشن کے تعاون سے بنائے گئے اس نیو کلیئر پاور پلانٹ سے 340 میگا واٹ بجلی پیدا ہوگی جو چشمہ 1 اور چشمہ 2 کے بعد یہ تیسرا پراجیکٹ ہے۔ چشمہ نیو کلیئر پاور پلانٹ 4 کا افتتاح سنہ 2017 میں کیا جائے گا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ کراچی نیو کلیئر پاور پراجیکٹ کے 2 اور کے 3 کا قیام سنہ 2030 تک عمل میں لایا جائے گا جس سے 8800 میگا واٹ بجلی 2030 تک نیشنل گرڈ کو فراہم کی جائے گی۔

واضح رہے کہ یہ تمام نیو کلیئر پاور پراجیکٹس پاکستان نیو کلیئر ریگولیٹری اتھارٹی فار سیف گارڈ سے پاس کروائے گئے ہیں۔

:وزیر اعظم کا خطاب

بعد ازاں وزیر اعظم نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ یہ پاور پلانٹ سائنس اور ٹیکنالوجی کے میدان میں پاک چین مشترکہ تعاون کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ اس اشتراک سے خطے میں ترقی کے نئے دور کا آغاز ہوگا۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ مجھے امید ہے چشمہ یونٹ 4 اپنی مقررہ مدت سے قبل یعنی سنہ 2017 کے وسط تک بجلی کی فراہمی شروع کردے گا۔

انہوں نے کہا کہ چشمہ میں چلنے والے نیو کلیئر پاور پلانٹس ملک کے تمام بجلی گھروں سے بہترین کارکردگی کے حامل ہیں اور یہ 600 میگا واٹ بجلی نیشنل گرڈ کو فراہم کر رہے ہیں۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ مجھے یاد ہے کہ چینی ساختہ پہلے جوہری بجلی گھر چشمہ یونٹ سی ون کی تعمیر کا معاہدہ ہمارے پہلے دور حکومت میں ہوا تھا۔ اس معاہدے نے توانائی کے شعبہ میں دونوں ممالک کے درمیان دوستی کی نئی مثال قائم کی۔

وزیر اعظم نے مظفر آباد میں بھی 3 بجلی گھروں کی تعمیر کا اعلان کیا۔

اس موقع پر وہ مخالفین پر وار کرنا بھی نہیں بھولے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کو دھرنوں اور احتجاج کی ضرورت نہیں ہے۔ یہ دھرنے پاکستان کے لیے نقصان دہ ہیں۔ سیاست کی خاطر ملکی مفاد قربان نہ کیا جائے۔ پاکستان ہم سب کا ہے، اس کی ترقی میں رکاوٹ نہ ڈالی جائے۔

وزیر اعظم نواز شریف نے چین کے اداروں کی جانب سے معاونت پر ان کا شکریہ بھی ادا کیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں