The news is by your side.

Advertisement

قطری فوجی طیاروں کی جارحیت، اماراتی سویلین جہازوں کے انتہائی قریب پرواز

دبئی : قطری فضائیہ کے جنگی طیاروں نے جارحیت دکھاتے ہوئے ایک مرتبہ پھر متحدہ عرب امارات کے مسافر بردار طیارے کو بحرینی فضائی حدود میں نرغے میں کرنے کی کوشش ہے۔

تفصیلات کے مطابق متحدہ عرب امارات کے جنرل سول ایوی ایشن نے قطری فضائیہ پر الزام عائد کیا ہے کہ قطر کے لڑاکا طیاروں نے اتوار کے روز یو اے ای کے مسافر بردار طیارے تک خطرناک انداز میں رسائی کی کوشش کی ہے۔

متحدہ عرب امارات کے حکام نے قطری فضائیہ کے اس اقدام کی سخت مذمت کرتے ہوئے اماراتی میڈیا کو بتایا کہ قطر کے لڑاکا طیاروں نے دمام سے ابو ظہبی 86 مسافروں کے ہمراہ آنے والے مسافر بردار طیارے کو بحرین کی فضائی حدود سے گزرتے وقت گھیرنے کی کوشش کی، جس کے سبب طیارے میں سوار مسافروں کی جان کو شدید خطرات لاحق ہوگئے تھے۔

حکام کا کہنا تھا کہ یواے ای کے مسافر بردار طیارے اور قطری فضائیہ کے لڑاکا طیاروں کے درمیان تصادم ہونے میں محض 2 میل کا فاصلہ رہ گیا تھا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ’قطر کی فضائی افواج کی جانب سے کیے جانے والے یہ اقدامات مسافر بردار طیاروں اور ہوائی نیویگیشن کے لیے انتہائی خطرناک ہیں‘۔

یو اے ای کی جنرل سول ایوی ایشن کا کہنا تھا کہ یہ حادثہ پہلی مرتبہ نہیں ہوا، گذشتہ ماہ بھی قطری فضائیہ کے جنگی طیاروں نے یو اے ای دو مسافر بردار طیاروں کے انتہائی نزدیک پروازیں کی تھیں، اس کے علاوہ بھی قطری فضائیہ متعدد اشتعال انگیز اقدامات کرچکی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ متحدہ عرب امارات سول ایوی ایشن کی عالمی تنظیم میں قطر کے خلاف درخواست دائر کرے گا۔

متحدہ عرب امارات کے جنرل سول ایوی ایشن کے حکام کا قطر کے اس غیر ذمہ دارانہ حرکت کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہنا تھا کہ اگر قطر کی یہ ہی صورتحال رہی تو ایسے حالات میں یو اے ای عالمی قوانین کے تحت کوئی بھی ایکشن لینے کا حق رکھتا ہے۔

واضح رہے کہ سعودی عرب،بحرین،مصر اورمتحدہ عرب امارات نے گشتہ برس قطرپردہشت گردوں کی معاونت کا الزام لگا کر سفارتی تعلقات منقطع کردیے تھے اور قطر پراپنی زمینی، فضائی اور سمندری سرحدوں کو بند کردیا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں