The news is by your side.

Advertisement

قرنطینہ سینٹر شکارپور میں مریض انتظامیہ کیخلاف پھٹ پڑے، ویڈیو پیغام وائرل

شکار پور : کورونا وائرس کے خدشے کے پیش نظر قرنطینہ سینٹر میں داخل کیے جانے والے لوگ زندگی سے تنگ آگئے، ان کا کہنا ہے کہ کورونا سے نہیں لیکن گندگی کے باعث ملیریا سے ضرور مرجائیں گے۔

تفصیلات کے مطابق شکار پور میں قائم قرنطینہ سنیٹر میں کورونا کے مبینہ مریض انتظامیہ کی جانب سے عدم توجہی اور صفائی کے ناقص انتطامات پر پھٹ پڑے۔ قرنطینہ سینٹر میں موجود مریضوں کا سوشل میڈیا پر پیغام وائرل ہوگیا۔

قرنطینہ سینٹر میں کورونا مریض بے یارو مددگار ہیں، انہوں نے ایک وڈیو سوشل میڈیا پرپوسٹ کی جس میں انہوں نے اعلیٰ حکام سے مدد کی التجائیں اور اپیل کی ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ دس دن ہوگئے انتظامیہ صرف ایک بار دیکھنے آئی، ہمیں یہاں مرنے کے لئے چھوڑ دیا گیا ہے، انہوں نے کہا کہ قرنطینہ سینٹر میں صفائی کا کوئی انتظام نہیں، مچھروں کی بہتات ہے، کورونا سے نہیں لیکن ملیریا سے ضرور مرجائیں گے، ہمارے کورونا وائرس کے ٹیسٹ دوبارہ کرائے جائیں۔

علاوہ ازیں سکھر قرنطینہ سینٹرمیں 56زائرین صحت یاب ہوگئے،قرنطینہ سینٹر انچارج انیس الرحمان کے مطابق تمام افراد کو تفتان سے سکھر قرنطینہ سینٹر منتقل کیا گیا تھا، تمام افراد کے کورونا کی تشخیص کیلئے کرائے گئے ٹیسٹ نیگٹو آئے ہیں، تمام افراد کو آج گھروں کیلئے روانہ کردیا جائے گا۔

واضح رہے کہ سندھ میں کورونا وائرس کےمزید چار مریض جاں بحق ہوگئے، تعداد ایک سوبائیس ہو گئی، چارسو ستائیس نئے کیسز رپورٹ ہوئے ہیں، وزیراعلیٰ سندھ مرادعلی شاہ نے شہریوں سے صحت کے اصولوں پر عمل کرنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ آپ کے تعاون سے ہی ہم وبا کو شکست دے سکتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں