site
stats
انٹرٹینمںٹ

ریشم نے شوبز کے مستحق افراد میں لاکھوں روپے بانٹ دیے

لاہور:ملک کی معروف اداکارہ ریشم نے گزشتہ برسوں کی طرح رواں رمضان المبارک میں بھی اے آر وائی نیوز کے ساتھ مل کر فلم انڈسٹری کے مستحق،غریب اور لاچار ایکسٹرا فنکاروں، تکنیک کاروں اور فلمی مزدوروں کے سحرو افطار کا اہتمام کرنے کے لیے لاکھوں روپے تقسیم کیے۔

Resham-01

دوسروں کا درد محسوس کرنے والی اداکارہ ریشم کا دل آج بھی پاکستان فلم انڈسٹری اور اس سے جڑے مستحق افراد کے ساتھ دھڑکتا ہے شاید یہی وجہ ہے کہ ریشم پورا سال ان لوگوں کے ٹھنڈے چولہے گرم رکھنے کےلیے پیسے جمع کرتی ہیں اور رمضان کے دوران لاہور کے تاریخی ایورنیو، باری اور شاہنور اسٹوڈیوز میں سیکڑوں فلمی مزدوروں کو جمع کر کے ان میں پیسے تقسیم کرتی ہیں۔

Resham-02

ریشم کی طرف سے پیسے اور راشن تقسیم کرنے کا یہ سلسلہ یکم رمضان المبارک سے شروع ہوکر عید تک جاری رہتا ہے جبکہ فلمی صنعت سے وابستہ ان مستحق افراد کی نظریں رمضان کا آغاز ہوتے ہی اپنی مسیحا کے انتظار میں اس یقین کے ساتھ جمی رہتی ہیں کہ جب تک ریشم زندہ ہے وہ ان کی مدد کرنے ضرور آئے گی۔

Resham-03

اس حوالے سے اے آروائی نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے اداکارہ ریشم نے بتایا کہ وہ کئی برس سے کوئی فلاحی ادارہ قائم کیے بغیر اپنی مدد آپ کے تحت کسمپرسی میں مبتلا ان فلمی مزدوروں کی فلاح وبہبود کی کوشش کرتی ہیں جس میں اللہ تعالی خود ہی ان کی مدد فرما دیتے ہیں جبکہ بہت سے قریبی دوست بھی اس حوالے سے ان سے رابطہ کر کے اپنا حصہ ڈالتے رہتے ہیں۔

ریشم نے کہا کہ دکھی انسانیت کی خدمت کر کے جو دلی سکون ملتا ہے میں اسے لفظوں میں بیان نہیں کر سکتی، اگر میرے بس میں ہو تو سب سے پہلے ملک کےہر مجبور اور غریب فرد کی زندگی کو خوشحال بنادوں اور وطن عزیز کا ایک بچہ بھی بھوکا نہ سوئے۔

Resham-04

ریشم نے مزید کہا کہ رمضان المبارک کا بابرکت مہینہ صرف بھوک اور پیاس برداشت کرنے کا نام نہیں بلکہ اپنے اردگرد مستحق افراد کی مدد کرنے کا بھی نام ہے، ایسے افراد جن کے ہاں سحرو افطار یا عید کی خوشیوں کا تصور نہیں، ایسے لوگوں کو اپنی خوشیوں میں حصہ دار بنانے سے غربت کی لکیر سے نیچے زندگی گزارنے والوں میں بھی زندگی کی رمق لوٹ سکتی ہے۔

دریں اثنا ریشم نے مزید بتایا کہ وہ بہت جلد پاکستان میں بڑھتی ہوئی غربت کے موضوع پر ذاتی فلم پروڈیوس کریں گی۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top