The news is by your side.

Advertisement

سائنوویک ویکسین کے خلاف الزامات پر چین کا رد عمل

بیجنگ: چینی وزارت خارجہ نے کرونا ویکسین کے خلاف مغربی میڈیا کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے انہیں حقائق کے منافی قرار دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق چین نے کہا ہے کہ چینی ویکسین کے خلاف الزامات حقائق کو مسخ کرنا ہے، چینی ویکسین کے مؤثر ہونے کے خلاف کچھ مغربی میڈیا کے الزامات کی کوئی سائنسی بنیاد نہیں ہے۔

چین کی وزارت خارجہ نے رد عمل میں کہا کہ مغربی میڈیا میں لگائے گئے الزامات میں چینی ویکسین سے متعلق حقائق کو مسخ کیا گیا ہے۔ امریکی اخبار نیویارک ٹائمز میں ایک رپورٹ شائع کی گئی ہے، جس میں جنوبی امریکی ملک چلی میں چینی ویکسین کے مؤثر ہونے کے حوالے سے سوال اٹھائے گئے تھے۔

یہ بھی پڑھیں:  سائینوویک  ویکسین کو ڈبلیو ایچ او نے منظور کرلیا

اس رپورٹ کے حوالے سے کیے جانے والے ایک سوال کے جواب میں چینی وزارت خارجہ کے ترجمان وانگ وین بن نے کہا کہ اس طرح کے الزامات حقائق کو توڑ مروڑ کر پیش کرنے اور سنسنی خیز الزام تراشی کے سوا کچھ نہیں۔

وانگ نے کہا کہ چلی کی حکومت متعدد مواقع پر کہہ چکی ہے کہ حقائق سے معلوم ہوا کہ سائنوویک ویکسین محفوظ اور مؤثر ہے، چلی کے طبی ماہرین کا خیال ہے کہ اگر چینی ویکسین کے ذریعے وسیع پیمانے پر ویکسینیشن نہ کی جاتی تو اس کے تباہ کن نتائج سامنے آتے۔

ترجمان نے مزید کہا کہ چلی کے شہری بھی اس بات سے اتفاق کرتے ہیں کہ ان کے ملک میں سائنوویک ویکسین نے بہترین کام کیا ہے، اور چینی ویکسین کے خلاف تنقید تعصب پر مبنی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں