The news is by your side.

Advertisement

آسان گھر اسکیم کے تحت گھروں کے قرضوں کا حجم 300ارب روپے سے بڑھ گیا، رضا باقر

کراچی: اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے گورنر رضا باقر نے کہا ہے کہ آسان گھر اسکیم کے تحت کم قیمت گھروں کے لیے 200 ارب روپے مالیت کی درخواستیں موصول ہوئیں ہیں۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق گورنراسٹیٹ بینک رضا باقر نے چھٹےبینکاری ایوارڈسےخطاب کرتے ہوئے کہا کہ کرونا کے باعث پاکستان اور دنیا کو بڑے چیلنجز کاسامنا تھا،وبا کے دوران پاکستان میں بینکاری خدمات کوجاری رکھنا بہت اہم تھا، جسے جاری رکھا گیا۔

رضا باقر نے کہا کہ آسان گھر اسکیم کے تحت گھروں کے قرضوں کا حجم 300ارب روپے سے بڑھ گیا ہے، کم قیمت گھروں کے قرض کیلئے200ارب مالیت کی درخواستیں  ملیں، جن میں سے 2300 درخواستیں منظور ہوئیں، بینکوں نے 80 ارب روپے قرض کم قیمت گھروں کیلئےمنظور کیے اور چھوٹے گھروں کے لیے 19 ارب روپے جاری کیے۔

مزید پڑھیں: اپنے گھر کا خواب ممکن : پہلی بار 200 ارب روپے سے زائد قرضے کی درخواستیں موصول

گورنر اسٹیٹ بینک نے کہا کہ کرونا سے نمٹنے کیلئے اسٹیٹ بینک نے تیزی سے بنیادی شرح سود کوکم کیا اور اسے 13.25 فیصد سے کم کر کے 7 فیصد تک کم کیا۔

رضا باقر کا کہنا تھا کہ ملکی معیشت کو بچانے کیلئے 2 ہزار ارب روپے کا سرمایہ فراہم کیا گیا، اسٹیٹ بینک کافراہم کردہ سرمایہ شرح نمو جی ڈی پی 5 فیصد مقرر کیا گیا تھا۔

انہوں نے بتایا کہ اسٹیٹ بینک نے روزگاراسکیم میں کاروبار کیلئے 238 ارب روپےفراہم کیے جبکہ کرونا وبا کے دوران اسٹیٹ بینک نے مختلف اسکیمیں متعارف کرائیں، اگر یہ قدم نہ اٹھایا جاتا تو معیشت 4 فیصد شرح سے زیادہ ترقی نہ کر پاتی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں