The news is by your side.

Advertisement

روسی کورونا ویکسین کے اثرات : ماہر صحت کا بڑا انکشاف

ماسکو : روس کے طبی ماہرین نے اس بات کی تردید کی ہے کہ کورونا ویکسین سپوتنک وی کے کسی قسم کے مضر اثرات ہیں ان کا کہنا ہے کہ بیماری اور انفیکشن الگ الگ ہیں۔

کورونا وائرس کی خلاف مدافعت پیدا کرنے والی روسی ماہرین کی تیار کردہ ویکسین کے ابتدائی نتائج انتہائی حوصلہ افزا بتائے گئے ہیں، ویکسین کے ابتدائی نتائج نہ صرف محفوظ ہیں بلکہ وہ وائرس کے خلاف جسم کے مدافعتی نظام کو مضبوط بھی بنارہی ہے۔

اس حوالے سے گامالیہ ریسرچ انسٹی ٹیوٹ اینڈ مائیکرو بیالوجی کے سربراہ پروفیسر گنسبرگ نے میڈیا کی رپورٹس کی سختی سے تردید کردی ہے۔

ان کا کہنا ہے کہا کہ روسی ساختہ کورونا وائرس ویکسین سپونتک وی کے دونوں حصوں کی خوراک لینے والے2000 رضاکاروں میں سے کسی کو بھی کسی قسم کے ری ایکشن کا سامنا نہیں کرنا پڑا۔

ایک سوال کے جواب میں پروفیسر گنسبرگ کا کہنا تھا کہ بیمار پڑنا اور انفیکشن ہونا دو الگ الگ چیزیں ہیں، واضح رہے کہ ٹیلی وژن چینلز میں یہ دعوے کیے جارہے تھے کہ کورونا وائرس کے مریض ویکسین لینے کے باوجود لوگوں سے رابطوں کے بعد دوبارہ انفیکشن میں مبتلا ہوگئے ہیں۔

یاد رہے کہ گامالیہ ریسرچ انسٹی ٹیوٹ اینڈ مائیکرو بیالوجی کی جانب سے تیار کردہ اس سپونتک وی نامی ویکسین کو گزشتہ ماہ اگست میں وزارت صحت نے رجسٹرڈ کیا تھا، جس کے بعد یہ دنیا میں کوویڈ19 کی پہلی رجسٹرڈ ویکسین بن گئی ہے۔

روسی صدر ولادیمیر پوٹن نے ماہ اگست میں کورونا وائرس کی نئی قسم کے خلاف مدافعت پیدا کرنے والی ویکسین کی دریافت کا اعلان کیا تھا۔

یہ مدافعتی ویکسین روسی ماہرینِ حیاتیات و متعدی امراض کی زیرِ نگرنی تیار کی گئی ہے، اب اس ویکسین کے مزید نتائج حاصل کرنے کے لیے اسے مختلف مگر محدود انسانی گروپوں پر باضابطہ اسے استعمال کیا جا رہا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں