The news is by your side.

Advertisement

روسی افواج کے حملوں میں چار ماہ کے دوران 790شہری ہلاک ہوئے، ہیومن رائٹس کی رپورٹ

سال 2011سے اب تک کم ازکم تین لاکھ ستر ہزار افراد ہلاک جبکہ کئی لاکھ اپنے گھروں سے محروم ہو چکے ہیں

لندن : سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس نے کہا ہے کہ ادلب میں روسی حملوں کی وجہ سے اپریل کے اواخر سے اب تک سات سو نوے شہری ہلاک ہو چکے ہیں۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق لندن میں قائم کی گئی سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کی رپورٹ میں بیان کیے گئے اعداد و شمار میں بتایا گیا ہے کہ ادلب میں روسی حملوں کی وجہ سے اپریل کے اواخر سے اب تک سات سو نوے شہری ہلاک ہو چکے ہیں۔

برطانیہ میں قائم اس ادارے نے مزید بتایا کہ اس مدت کے دوران ہونے والی لڑائی میں دو ہزار فائٹر بھی مارے جا چکے ہیں، جن میں سے نو سو کے قریب شامی فورسز کے اہلکار تھے۔

رپورٹ کے مطابق 2011میں شروع ہونے والے شامی تنازعے کے نتیجے میں اب تک کم ازکم تین لاکھ ستر ہزار افراد ہلاک جبکہ کئی لاکھ اپنے گھروں سے محروم ہو چکے ہیں۔

مزید پڑھیں: روسی فوج کی شام کے صوبے ادلب میں فضائی بمباری، 44 افراد جاں بحق

عالمی برادری کی کوشش ہے کہ اس لڑائی کو روکنے کی خاطر پرامن راستہ تلاش کیا جائے۔ اقوام متحدہ کی طرف سے ایسی ہی کئی کوششوں کے باوجود یہ تنازعہ ابھی تک حل نہیں ہو سکا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں