The news is by your side.

Advertisement

شوٹنگ کے لئے خلا میں گئی ٹیم کی واپسی، کیا پیش رفت ہوئی؟

تاریخ میں پہلی بار خلا میں فلم کی عکس بندی کے لیے انٹرنیشنل اسپیس اسٹیشن پر بارہ دن گزارنے کے بعد روسی عملہ زمین پر واپس آگیا۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق روس کی خلائی ایجنسی نے وہ تاریخی لمحات براہ راست شیئر کئے، جس میں دیکھا جاسکتا ہے کہ روسی اداکارہ یولیا پرسیلد اور ہدایتکار کلم شپنکو نے شیڈول کے مطابق قازقستان میں اتوار کو لینڈ کیا۔

انہیں چھ ماہ سے اسپیس سٹیشن پر موجود خلاباز اولیگ نویتسکی واپس لے کر آئے، روسی سپیس ایجنسی روس کوسموس نے سماجی رابطے ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں لکھا کہ ’خلائی جہاز سویوز ایم ایس 18 محفوظ حالت میں کھڑا ہے اور عملے کے ارکان اچھا محسوس کر رہے ہیں۔

فلم کا عملہ رواں ماہ کے آغاز میں خلا باز اینٹون شکیپریو کے ساتھ فلم ’دا چیلنج‘ کے سین عکس بند کرنے انٹرنیشنل اسپیس سٹیشن کی جانب روانہ ہوا تھا، اگر یہ پراجیکٹ ٹھیک طرح سے چلتا رہا تو مذکوہ روسی عملہ ہالی وڈ کے ایک پراجیکٹ کو پیچھے چھوڑ دے گا۔

فلم ’دا چلینج‘ ایک سرجن کی کہانی ہے جسے ایک خلاباز کو بچانے کے لیے انٹرنیشنل اسپیس سٹیشن بھیجا جاتا ہے، اینٹون شکیپریو اور دیگر دو خلاباز جو پہلے سے انٹرنیشنل اسپیس سٹیشن پر موجود تھے، کا فلم میں مختصر کردار ہے۔

یہ بھی پڑھیں: معروف اداکار خلا میں جانے والے معمر ترین شخص بن گئے

ناسا کے ایک ترجمان نے روسی نیوز ایجنسی کو بتایا کہ جب پرواز کنٹرول کرنے والے روسی کنٹرولز نے جمعے کو سویوز ایم ایس 18 پر تجربہ کیا تو خلائی جہاز نے غیر متوقع طور پر فائر کیا اور انٹرنیشنل اسپیس سٹیشن کو 30 منٹ کے لیے غیر مستحکم کر دیا۔

واضح رہے کہ فلم ’مشن امپاسیبل‘ کے اسٹار ٹام کروز نے گذشتہ سال ناسا اور ایلون مسک کی کمپنی اسپیس ایکس کے اشتراک سے خلا میں فلم بنانے کا اعلان کیا تھا۔

تاہم ترجمان نے روانگی کی تصدیق کی اور کہا کہ پرواز اپنے شیڈول کے مطابق جائے گی۔

واضح رہے کہ فلم ’مشن امپاسیبل‘ کے سٹار ٹام کروز نے گذشتہ سال ناسا اور ایلون مسک کی کمپنی سپیس ایکس کے اشتراک سے خلا میں فلم بنانے کا اعلان کیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں