The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب : ملازمتوں میں اضافے کیلئے حکومت کے اہم اقدامات

ریاض : سعودی وزیرافرادی قوت و سماجی بہبود احمد الراجحی نے کہا ہے کہ لیبر مارکیٹ میں سعودی ملازمین کی تعداد 19لاکھ سے تجاوز کرگئی ہے۔

سعودی عرب کے مقامی خبر رساں اداروں کی رپورٹ کے مطابق گزشتہ روز پریس کانفرنس کے دوران انہوں نے کہا کہ یہ تاریخی ریکارڈ ہے ماضی میں اس کی مثال نہیں ملتی۔ سعودی وژن 2030 کے ثمرات نظر آنے لگے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اس سال مزید 30 شعبوں کی سعودائزیشن ہوگی،اس کا اعلان جلد کیا جائے گا۔2021کے دوران دو لاکھ آسامیاں پیدا کرنے کے لیے32 پیشوں کی سعودائزیشن کی گئی اور اس کا نتیجہ توقع سے دگنی اسامیوں پر سعودیوں کے تقرر کی صورت میں برآمد ہوا ہے۔

In pursuit of happiness: Employment opportunities for Pakistanis decreasing  in Saudi Arabia and the Gulf - Pakistan - Dunya News

الراجحی نے اس بات پر خوشی کا اظہار کیا کہ پرائیویٹ سیکٹر کی کمپنیاں اور ادارے سعودائزیشن کے سلسلے میں 95 فیصد تک کی پابندی کررہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ سعودائزیشن کے حوالے سے یہ معیار مقرر کیا گیا ہے کہ کسی بھی پیشے میں مقامی شہری روزگار کے متلاشی ہوں، آمدنی اچھی ہو اور اسے مزید بہتر بنانے کی گنجائش ہو۔

Saudi Arabia 2021: Women at Work Climbing Fast in Conservative Islamic  Kingdom - Bloomberg

انہوں نے کہا کہ کسی بھی پیشے کے لیے یہ کہنا کہ وہ سعودیوں کے لیے مختص ہے اب یہ ماضی کا قصہ بن گیا ہے، وجہ یہ ہے کہ سعودی شہری مختلف شعبہ جات میں کام کررہے ہیں اور ان کی آمدنی بھی اچھی ہے۔

انہوں نے سماجی کفالت کے نئے نظام کے حوالے سے کہا کہ نیا نظام سماجی کفالت اور ملازمت کو منسلک کرکے بنایا گیا ہے، یہ اس صورت میں نافذ ہوگا جب ایک خاندان کی آمدنی مقررہ حد سے زیادہ نہیں ہوگی

Saudization of three professions to come into force from December 30 -  Saudi Gazette

سعودی ذرائع کے مطابق الراجحی نے2021 کے دوران سعودائزیشن کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ گزشتہ برس32 پیشوں کی سعودائزیشن سے17 ہزار سعودی انجینیئرز کو ملازمتیں ملی ہیں۔16 ہزار اکاؤنٹنٹ سعودی تعینات ہوئے۔3 ہزار ڈینٹسٹ اور 6 ہزار فارماسسٹ سعودیوں کو ملازمت دی گئی۔

سعودی وزیر افرادی قوت نے بتایا کہ ملازمین کی بروقت تنخواہ بینکوں کے ذریعے ادا کرنے کا ہدف 80 فیصد تک پہنچ گیا ہے، وزارت نے تنخواہوں کی بروقت ادائیگی کو یقینی بنانے کے لیے آن لائن سسٹم قائم کیا تھا اس کے بھی اچھے نتائج ملے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں