The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب: 5 برس میں 3 لاکھ ملازمین زخمی، اکثریت غیرملکی

ریاض: سعودی عرب میں 5 برس کے دوران 3 لاکھ سے زائد ملازمین  کام کرنے کے دوران زخمی ہوئے جن میں سے 92 فیصد غیر ملکی تھے اور بہت بڑی تعداد کا تعلق کنسٹرکشن کے شعبے سے تھا۔

زیادہ حادثات ریاض، مکہ اور دمام میں پیش آئے

عرب نیوز نے ایک عرب روزنامے میں شائع سرکاری رپورٹ کا حوالہ دیتے ہوئے بتایاہے کہ ان میں سے زخمی ہونے کے 54 فیصد واقعات ریاض، مکہ اور دمام میں پیش آئے۔

زخمی افراد میں 46 فیصد ملازمین تعمیراتی شعبہ سے تھے

عرب نیوز کے مطابق اعدادو شمار میں یہ اہم بات دیکھنے میں آئی کہ ان پانچ برس میں زخمی ہونے والے تمام ملازمین میں سے 46 فیصد کا تعلق ایک ہی  شعبہ کنسٹرکٹشن (تعمیرات) سے تھا۔

سرکاری رپورٹ کے مطابق سال 2012ء میں 65 ہزار 656  ملازمین،  سال 2013ء میں 52 ہزار 467 ملازمین،  سال 2014ء میں 69 ہزار 241 ملازمین،  سال 2015ء میں 67 ہزار 087 ملازمین اور سال 2016ء میں 53 ہزار 404 ملازمین کام  کے دوران زخمی ہوگئے۔

سال 2016ء میں حادثات میں 20 فیصد کمی

اعدادو شمار دیکھے جائیں تو سال 2016ء میں زخمی ہونے والے افراد کی تعداد میں 20 فیصد کمی واقع ہوئی۔

خیال رہے کہ سعودی عرب میں نجی شعبے میں سوشل سیکیورٹی سسٹم کا قانون بلاامتیاز سعودی اور مقامی افراد پر عمر اور جنس کی تفریق کے بغیر لاگو ہوتا ہے۔

اس قانون کے تحت کمپنی مالک ہر ملازم کے عوض انشورنس کی ماہانہ رقم جمع کراتا ہے اور کسی بھی حادثے کی صورت میں زخمی ہونے والے ملازم کے تمام طبی اخراجات انشورنس کے ذریعے ادا کیے جاتے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں