The news is by your side.

Advertisement

شبر زیدی کا امریکا جیسا جدید ٹیکس سسٹم لانے کا عندیہ

کراچی: فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) کے چیئرمین شبر زیدی نے کہا ہے کہ ایف بی آر کے سسٹم کو زیادہ سے زیادہ خودکار بنانے کی کوشش کررہے ہیں، امریکا کی طرز پر ٹیکس گزاروں کی معلومات جمع کی جائیں گی۔

ان خیالات کا اظہار انھوں نے کراچی میں‌ منعقدہ آئی کیپ کے مباحثے میں دورانِ خطاب کیا۔ چیئرمین ایف بی آر  کا کہنا تھا کہ ایف بی آر کا عوامی تصور بہترکرنےکی ضرورت ہے کیونکہ عوام کو اعتبار نہیں اورانہیں خوف ہے کہ اگر وہ ٹیکس ادا کریں گے تو ہراسانی کا سامنا کرنا پڑے گا، البتہ اب امریکی طرز کا ٹیکس سسٹم متعارف کرایا جائے گا۔

اُن کا کہنا تھا کہ کراچی کے اکثر دکان دار، تاجر سال میں ایک لاکھ روپے ٹیکس ادا کرتے ہیں، ایف بی آر کے پاس ٹیکنالوجی اور آٹو میشن کےعلاوہ کوئی راستہ نہیں، ٹیکس گزاروں اور محکمے کے درمیان رابطہ کم کرنا ضروری ہے۔ شبر زیدی کا کہنا تھا کہ ایف بی آر کو فیس لیس بنانے پر کام کررہےہیں، ٹیکس ادائیگی کے سسٹم کو خود کار بنانے کے لیے اقدامات کیے جارہے ہیں، ماضی میں ادارے کے پاس کوئی ڈیٹا بینک نہیں تھا البتہ اب سسٹم بنایا جارہا ہے جس میں ٹیکس گزاروں کی ظاہر نہ کی جانے والی معلومات ہوگی۔

اُن کا کہنا تھا کہ امریکا میں بھی عوام کوخوف ہوتا ہے حکومت کے پاس ہماری معلومات ہیں، اس نظام سے عوام میں ایف بی آر کا خوف ختم ہوگا، ریٹرن میں ظاہر کی جانے والی معلومات پر ہی ایف بی آر کام کرتا رہا مگر اب تمام اثاثوں کی تحقیقات کی جائیں گی۔

چیئرمین ایف بی آر کا کہنا تھاکہ سیلز ٹیکس کی رجسٹریشن اب آن لائن کی جاسکتی ہے، آئندہ سال فیس لیس ای آڈٹ سسٹم متعارف کرائیں گے جس کی مدد سے معلوم ہوگا کہ کون آڈٹ کررہا ہے، ورلڈ بینک کی معاونت سے ٹیکس قوانین اور ایف بی آر کے پراسیس پیچیدہ ہیں جنہیں آسان بنایا جارہا ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں