The news is by your side.

Advertisement

داعشی خاتون شمیمہ کے شوہر نے بھی داعش چھوڑ کر واپس جانے کی خواہش ظاہر کردی

ایمسٹرڈیم : داعشی لڑکی شمیمہ بیگم کے ڈچ شوہر نے بھی اپنےن بیوی اور نومولود بچے کے ہمراہ اپنے وطن ہالینڈ واپس جانے کی خواہش ظاہر کردی۔

تفصیلات کے مطابق برطانوی لڑکی شمیمہ بیگم کے ڈچ شوہر نے قبول کیا کہ وہ داعش کے جنگی گروہ کے ساتھ مسلح کارروائیاں کرتا رہا ہے لیکن اب وہ اپنے اہل خانہ کے ہمراہ واپس اپنے ملک جانا چاہتا ہے۔

برطانوی خبر رساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے ڈچ شہری یاگو ریڈیجک کا کہنا تھا کہ ’میں داعش سے مسترد کرچکا ہوں اور دہشت گروہ سے نکلنے کی کوشش کررہا ہوں‘۔

ریڈیجک کا کہنا تھا کہ ’مجھ پر ایک شدت پسند نے ہالینڈ کے جاسوس ہونے کا الزام لگایا جس کے بعد مجھے رقہ شہر میں قید کرکے تشدد کا نشانہ بنایا گا‘۔

برطانوی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ 19 سالہ شمیمہ بیگم اور اس کے 23 سالہ شوہر نے مشرقی شام کے علاقے بغوز فتح ہونے کے بعد شامی جنگجوؤ کو گرفتاری دے دی تھی جس کے بعد انہیں الحول پناہ گزین کیمپ میں منتقل کردیا گیا۔

ریڈیجک کا کہنا تھا کہ میں نے شمیمہ بیگم سے شادی کرکے میں کوئی غلطی نہیں، جب اس کی عمر 15 سال اور میری عمر 23 سال تھی کیوں یہ شادی خود شمیمہ کی مرضی تھی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ اگر داعشی جنگجوؤ یاگو ریڈیجک واپس ہالینڈ گیا تو اسے دہشت گرد گروپ میں شمولیت اختیار کرنے کے جرم میں 6 برس قید کی سزا ہوسکتی ہے۔

غیر ملکی خبر رساں اگرچہ ریڈیجک دہشت گردی کی تیار کردہ حکومتی فہرست میں شامل ہے لیکن اس کی ممبر شپ منسوخ نہیں کی گئی۔

مزید پڑھیں : داعش رکن شمیمہ بیگم برطانیہ لوٹیں تو مقدمے کا سامنا کرنا پڑے گا، ساجد جاوید

واضح رہے کہ برطانیہ کے وزیر داخلہ ساجد جاوید نے داعشی لڑکی کی برطانیہ لوٹنے کی خواہش پر رد عمل دیتے ہوئے کہا تھا کہ ’اگر 19 سالہ شمیمہ بیگم واپس برطانیہ آئیں تو انہیں مقدمے کا سامنا کرنا پڑے گا‘۔

برطانوی وزیر داخلہ نے شمیمہ بیگم کی برطانوی شہریت منسوخ کرتے ہوئے کہا تھا کہ ’ہمیں یاد رکھنا چاہیے جس نے بھی داعش میں شمولیت اختیار کرنے کےلیے برطانیہ چھوڑا تھا وہ ہمارے ملک کا وفا دار نہیں ہے‘۔

انہوں نے شمیمہ بیگم کو مخاطب کرکے کہا کہ ’اگر تم نے واہس آنے کی تیاری کرلی ہے تو تم تفتیش اور مقدمے کا سامنا کرنے کےلیے تیار رہوں‘۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں