The news is by your side.

Advertisement

ٹرمپ کی پریس کانفرنس کے دوران فائرنگ، امریکی صدر اچانک چلے گئے

واشنگٹن : امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی پریس بریفنگ کے دوران وائٹ ہاؤس کے باہر فائرنگ ہوگئی جس کے بعد خفیہ سروسز سے متعلقہ گارڈز نے مسلح شخص کو گولی مار دی، ٹرمپ کو پریس کانفرنس چھوڑ کرجانا پڑا۔

تفصیلات کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ گزشتہ شام کورونا وائرس سے متعلق پریس بریفنگ دے رہے تھے۔ اس دوران وائٹ ہاؤس کے باہر زور دار فائرنگ کی آواز آئی، فائرنگ کی آواز سے خوف و ہراس پھیل گیا۔

ٹرمپ کو امریکی سیکریٹ سروس کے ایک ایجنٹ نے ہنگامی طور پر وائٹ ​​ہاؤس کے بریفنگ روم سے باہر نکالا، صدرٹرمپ کو پریس روم سے واپس اوول آفس لے جایا گیا۔

امریکی میڈیا رپورٹس کے مطابق صدر ٹرمپ نے دوبارہ پریس کانفرنس میں آ کر بتایا کہ خفیہ گارڈز نے وائٹ ہاؤس کے باہر ایک مسلح شخص کو گولی ماری ہے اور اسے زخمی حالت اسپتال لے جایا گیا ہے، سیکیورٹی اسٹاف نے کہا کہ حالات کنٹرول میں ہیں اس لیے واپس آگیا ہوں۔

خبر رساں ایجنسی کے مطابق اس واقعے کے بعد وائٹ ہاؤس کو لاک ڈاؤن کر دیا گیا، یہ فائرنگ وائٹ ہاؤس سے صرف ایک بلاک فاصلے پر17 ویں اسٹریٹ اور پنسلوینیا ایونیو کے قریب کی گئی۔

پولیس ابھی بھی اس مشتبہ شخص کا مقصد جانے کی کوشش کرہی ہے اور اس معاملے میں مزید تفصیلات فراہم کرنے کی کوشش جاری ہے، ملزم کو مقامی اسپتال منتقل کیا گیا ہے  لیکن اس کی حالت فوری طور پر معلوم نہیں ہوسکی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں