The news is by your side.

Advertisement

بھارت میں پہلی صف میں بیھٹنے پر طالب علم قتل

نئی دہلی : بھارتی طالب علموں نے کوچنگ سینٹر کی کلاس میں پہلی صف میں بیھٹنے پر اپنے ساتھی طالب رنجیت سنگھ کو بہیمانہ تشدد کے بعد قتل کردیا۔

تفصیلات کے مطابق بھارت کے شمال میں واقع ریاست اترپردیش کے گاؤں مالوبر میں پانچ طالب علموں کے ایک گروہ نے مبینہ طور پر اپنے ساتھی طالب علم کو محض اگلے صف میں تشریف فرما ہونے پر قتل کردیا۔

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ طالب علموں کا گروہ متاثرہ رنجیت سنگھ کو نیم برہنہ حالت فولاد کی راڈز سے مار رہا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ ملزمان نے متاثرہ نوجوان کو زبانی نوک جھوک کے بعد کوچنگ سینٹر کی عمارت سے باہر نکال دیا تھا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق رنجیت اپنے دوستوں سے ہاتھا پائی کو آمادہ ہوگیا تھا کیوں کہ وہ کوچنگ میں شرکت کے لیے اگلی صف میں بیھٹنا چاہتا تھا۔

پولیس نے بتایا کہ ملزمان نے اگلے روز متاثرہ نوجوان پر راڈز اور ڈنڈوں سے اس وقت حملہ کیا جب وہ کلاس میں شرکت کے لیے جارہا تھا، حملے کے دوران رنجیت سنگھ کو سر اور سینے پر شدید زخم آئے جو اس کے لیے جان لیوا ثابت ہوئے۔

بھارتی میڈیا کا کہنا تھا کہ ملزمان رنجیت کو زخمی حالت میں چھوڑ کر جائے وقوعہ سے فرار ہوگئے تھے لیکن عوام نے ایک ملزم کو پکٹر کر پولیس کے حوالے کردیا تھا جس کی مدد سے پولیس پانچوں ملزمان کو گرفتار کرلیا ہے۔

پولیس کا مؤقف ہے کہ رنجیت کو فوری طور پر قریب کے ضلعی اسپتال لے جایا گیا تھا اسے فوری طبی امداد فراہم کی جاسکے تاہم ڈاکٹر نے رنجیت کو مردہ قرار دے دیا تھا۔

ذرائع کا کہنا تھا کہ رنجیت سنگھ کے والد گجرات کی ایک فیکڑی میں ملازم ہیں اور والدہ شدید علیل ہیں جو علاج کی غرض سے دہلی میں مقیم ہیں۔

پولیس نے پانچوں ملزمان کے خلاف نوجوان طالب علم کو قتل کرنے کا مقدمہ درج کرلیا ہے جبکہ کوچنگ سینٹر کے مینیجر کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جارہے ہیں کیوں کہ مذکورہ کوچنگ سینٹر کو کلاسسز کے انعقاد کی اجازت نہیں ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں