site
stats
ماحولیات

تائیوان کا درختوں پر مشتمل اسکائی اسکریپر

تائی پے: تائیوان میں فضائی آلودگی سے لڑنے کے لیے ایک بلند و بالا اسکائی اسکریپر تعمیر کیا جارہا ہے جس میں 23 ہزار درخت لگائے جائیں گے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ درختوں پر مشتمل یہ عمارت ہر سال 130 ٹن کاربن ڈائی آکسائیڈ جذب کرے گی۔ مذکورہ عمارت کی 21 منزلوں پر 23 ہزار درخت لگائے جارہے ہیں۔

یہ عمارت ڈی این اے کے ساخت جیسی ہے اور اس کے اندر اور باہر شجر کاری کی جائے گی۔ یہ منصوبہ بہت تیزی سے تعمیر کیا جارہا ہے اور توقع ہے کہ یہ بہت جلد مکمل ہوجائے گا۔

اس عمارت پر یہ شجر کاری عمودی باغبانی کے تحت کی جارہی ہے۔

عمودی باغبانی کا تصور چند عشروں قبل ہی پرانا ہے جس میں زمین کے بجائے دیواروں پر باغبانی کی جاتی ہے۔ اس مقصد کے لیے عمارت کی دیوار سے ذرا سے فاصلے پر مختلف سہاروں کے ذریعہ پودے اگائے جاتے ہیں جو نشونما پا کر دیوار کو ڈھانپ لیتے ہیں۔

مختلف گھروں اور عمارتوں کی دیواروں کو اس طریقے سے سبز کردینا اس عمارت کے درجہ حرات کو کم رکھتا ہے جو موسم کی حدت سے لڑنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ دنیا کی تیزی سے اضافہ ہوتی آبادی کے باعث جنگلات اور درختوں کو کاٹ کر مختلف رہائشی و تعمیراتی منصوبے بنائے جا رہے ہیں۔ اس سے شہروں سے سبزہ بالکل ختم ہو کر شدید گرمی، اور آلودگی کا سبب بن رہا ہے۔

ایسے میں ماہرین کا خیال ہے کہ عمودی باغبانی کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے اور ہمیں بہت جلد اس کی طرف رجوع کرنا ہوگا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top