یورپی پارلیمنٹ میں منی لانڈرنگ پر 4 برس قید کا قانون منظور European Parliament
The news is by your side.

Advertisement

یورپی پارلیمنٹ میں منی لانڈرنگ پر 4 برس قید کا قانون منظور

برسلز : یورپی پارلیمنٹ کے قانون سازوں نے منی لانڈرنگ کرنے والے کو 4 برس قید کی سزا دینے کا قانون منظور کرتے ہوئے ہنگری کے خلاف آرٹیکل 7 کی خلاف پر قرارداد بھی پیش کردی۔

تفصیلات کے مطابق یورپی ممالک میں منی لانڈرنگ کی روک تھام کے لیے گذشتہ روز یورپی پارلیمنٹ میں نئی قانون سازی عمل لائی گئی ہے جس کے تحت یورپی یونین میں منی لانڈرنگ کرنے والے شخص کو کم از کم 4 برس قید کی سزا دینے کا بل پاس ہوا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ گذشتہ روز منی لانڈرنگ کی روک تھام کے حوالے سے ہونے والے یورپی پارلیمنٹ کے اجلاس میں ارکان ممالک نے نئے قانون کی منظوری دے دی۔

یورپی میڈیا کا کہنا ہے کہ ارکین پارلیمنٹ نے فیصلہ کیا کہ 10 ہزار یورو کیش کی حد کے باوجود اگر کسی پر شک ہوا تو اس کی نقدی ضبط کی جائے گی۔

یورپی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ پارلیمنٹ نے نئی قانون سازی کا بل اس لیے منظور کیا تھا دہشت گردوں کی مالی معاونت کو روکا جاسکے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ یورپی پارلیمنٹ کے اجلاس میں یورپی یونین کاپی رائٹس کے قانون کی بھی منظوری دی گئی ہے، جس کے ذریعے نشر و اشاعت کے چھوٹے ادارے بڑی ویب سایٹس جیسے (گوگل، فیس بک) سے زیادہ بااختیار ہوں گے۔

خبروں کی نشر و اشاعت کرنے والے چھوٹے ادارے مواد کی چوری کے خلاف بڑے اداروں کے خلاف قانونی چارہ جوئی کرسکیں گے۔

یورپی پارلیمنٹ نے اجلاس میں ہنگری حکومت کو آرٹیکل 7 کی خلاف ورزی پر قرار داد پیش کرتے ہوئے سزا دینے کی حمایت کردی ہے، اگر ہنگری کو سزا ہوئی تو ہنگری یورپی یونین میں ووٹ بھی نہیں دے سکے گا۔

دوسری جانب ہنگری کی وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ مہاجرت کے حامی سیاست دانوں نے ہنگری سے بدلہ لیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں