The news is by your side.

Advertisement

دہائیوں پرانے “مسئلہ کشمیر”کا کوئی فوجی حل نہیں، سیکریٹری جنرل اقوام متحدہ

نیویارک: اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوتریس کا کہنا ہے کہ اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق مسئلہ کشمیر کےحل کے بیان پر قائم ہوں۔

تفصیلات کے مطابق اپنے بیان میں اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے کہا کہ دہائیوں پرانے مسئلہ کشمیر کا کوئی فوجی حل نہیں، فوجی تصادم دونوں ممالک سمیت دنیا کیلئے بھی تباہ کن ہوگا، پاکستان اور بھارت مسئلہ کشمیر کےحل کیلئے اکٹھے ہوں۔

انتونیو گوتریس نے کہا کہ وہ کشمیر کے حوالے سے اپنے اگست میں دیئے گئے بیان پر قائم ہیں اور پُرامن تصفیے کے لیے اپنی خدمات پیش کرنے کے لیے تیار ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں چیزیں درست سمت میں نہیں جارہی ہیں، انسانی حقوق کا احترام بے حد ضروری ہے اور اختیار و طاقت رکھنے والی انتظامیہ پر ہی شہریوں کو ان کے بنیادی حقوق کی فراہمی کی ذمہ داری عائد ہوتی ہے۔دوسری جانب اقوام متحدہ میں پاکستان نے ایک بار پھر بھارت کے اس جھوٹے دعوے کو ایک بار پھر مسترد کردیا ہے کہ مقبوضہ جموں و کشمیر اس کا اٹوٹ انگ ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  اقوام متحدہ کے جنرل سیکرٹری نے کورونا ویکسین لگوا لی

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے پاکستان کے مندوب جواد علی نے کہاکہ بھارت کا جموں و کشمیر کے ساتھ قابض ہونے کے علاوہ کوئی تعلق نہیں، وہ پاکستان کے مستقل مندوب منیر اکرم کی طرف سے بھارت کے غیرقانونی زیر قبضہ جموں وکشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کو بے نقاب کرنے اور پاکستان کیخلاف بھارتیہ جنتا پارٹی اور آر ایس ایس کے انتہا پسندوں کے مذموم عزائم کو بے نقاب کرنے پر بھارتی مندوب کے ردعمل پر جواب دے رہے تھے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں