site
stats
بزنس

بڑھاپے تک ارب پتی بنانے والی عادات

کچھ لوگ ساری زندگی محنت کرتے ہیں اور ساتھ ساتھ بہت دولت مند بھی بننا چاہتے ہیں، لیکن ایسے افراد جب بوڑھے ہو کر ریٹائرڈ ہوتے ہیں تو انہیں علم ہوتا ہے کہ انہوں نے ساری زندگی اتنا بھی نہیں کمایا کہ وہ سکون سے اپنا بڑھاپا گزار سکیں۔

دراصل یہ افراد اپنی ملازمتوں اور کام کے عرصے کے دوران پیسوں کے معاملے میں اس ذہانت کا مظاہرہ نہیں کرتے جو آگے چل کر انہیں معاشی خوشحالی دے سکتا ہو۔

دنیا کے دولت مند ترین افراد بشمول مارک زکر برگ کچھ ایسی عادات بتاتے ہیں جنہیں ہر اس شخص کو اپنانا چاہیئے جو دولت مند بننا چاہتا ہے۔

اگر ان عادات کو ابھی سے اپنا معمول بنا لیا جائے تو یقیناً ریٹائرمنٹ تک آپ خود کو اس قابل بنا لیں گے کہ بڑھاپے کی فراغت کے دور میں آپ پیسوں کے لیے کسی کے محتاج نہ رہیں۔

اخراجات پر نظر رکھیں

ہمیشہ کسی بھی چیز پر پیسے خرچ کرتے ہوئے پہلے تو یہ سوچیں کہ وہ شے آپ کے لیے کتنی ضروری ہے۔ اگر آپ کسی غیر ضروری اور مہنگی شے پر خرچ کرنے جارہے ہیں تو یقیناً یہ ایک دانش مندانہ اقدام نہیں ہے۔

ہنگامی صورتحال کے لیے تیار رہیں

ہر ماہ کچھ رقم کسی جگہ محفوظ کر دینے کی عادت اس وقت آپ کے کام آئے گی جب اچانک آپ کسی ہنگامی صورتحال سے دو چار ہوں، آپ کی ملازمت چلی جائے یا کاروبار میں گھاٹا ہوجائے۔

جمع شدہ رقم کو ایک علیحدہ اکاؤنٹ میں محفوظ رکھیں اور اس اکاؤنٹ کو بالکل بھول جائیں۔

آمدنی میں اضافے کی صورت میں

اگر آپ کی تنخواہ یا آمدنی میں اضافہ ہوا ہے تو اپنی سیونگ کی مقدار بھی بڑھا دیں۔ اس کا یہ مطلب نہیں کہ آپ اپنی جائز خواہشات کی تکمیل یا تفریحات نہ کریں، بلکہ دونوں میں توازن رکھیں۔

ایک ہی جگہ سرمایہ کاری سے گریز

اپنی تمام جمع پونجی کو ایک ہی جگہ محفوظ رکھنے، یا ایک ہی جگہ پر سرمایہ کاری کرنے سے گریز کریں۔ اگر آپ نے کسی ایک ہی کاروبار میں بہت ساری سرمایہ کاری ہے تو نقصان کی صورت میں آپ اپنی تمام جمع پونجی سے ہاتھ دھو بیٹھیں گے۔

ذہانت سے سرمایہ کاری کریں

پیسے کو محفوظ رکھنے کا آسان طریقہ سرمایہ کاری کرنا ہے۔ اس سے نہ صرف آپ کی اصل رقم محفوظ رہتی ہے بلکہ وقتاً فوقتاً اضافی رقم بھی حاصل ہوتی ہے۔

لیکن سرمایہ کاری کرتے ہوئے ذہانت سے کام لیں۔ کسی بھی جگہ سرمایہ کاری کرنے سے قبل اس کاروبار کے پھیلاؤ اور مستقبل کے بارے میں تحقیق کریں اور پڑھیں۔ ان افراد سے گفتگو کریں جو پہلے سے اس کاروبار میں سرمایہ کاری کر چکے ہوں۔ اس کے بعد ہی سرمایہ کاری کرنے کا فیصلہ کریں۔

آمدنی میں اضافہ کریں

بعض لوگ جب معاشی بحران کا شکار ہوتے ہیں تو وہ اپنے اخراجات کو کم کر کے غربت میں زندگی گزارنے لگتے ہیں۔ یہ ایک غلط نقطہ نظر ہے۔ اس کے برعکس ان ذرائع پر غور کریں جہاں سے آپ جائز طریقے سے اپنی آمدنی میں اضافہ کرسکیں۔

اپنی صلاحیتوں کا بھرپور استعمال کریں، محنت کریں، کام سے ایمانداری اور مخلصی کا مظاہرہ کریں تو یقیناً آپ بھی معاشی طور پر خوشحال ہوجائیں گے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top