The news is by your side.

Advertisement

ٹریفک چالان کے حوالے سے سعودی ٹریفک پولیس کی وضاحت

ریاض: سعودی ٹریفک پولیس نے ایسے افراد کے لیے جو اپنی گاڑی عارضی طور پر استعمال کے لیے کسی اور شخص کو دیں، ٹریفک چالان کی وضاحت دی ہے۔

سعودی ویب سائٹ کے مطابق مملکت میں ڈرائیونگ کے دوران خلاف ورزیوں پر خود کار چالان رجسٹریشن پلیٹ کے ذریعے درج کیے جاتے ہیں، گاڑی کی نمبر پلیٹ کے ذریعے چالان کا اندراج گاڑی کے مالک پر کیا جاتا ہے۔

ٹریفک پولیس کا اس حوالے سے کہنا تھا کہ قوانین کی خلاف ورزی پر موصول ہونے والا چالان مالک کے بجائے گاڑی استعمال کرنے والے کے نام پر منتقل کیا جا سکتا ہے البتہ اس کے لیے درکار ثبوت مہیا کیا جانا ضروری ہے۔

ٹریفک پولیس کے ٹویٹر پر دریافت کیا گیا تھا کہ خلاف ورزی پر کیے جانے والے چالان کو گاڑی کے مالک کے بجائے عملی طور پر گاڑی استعمال کرنے والے کے نام منتقل کیا جا سکتا ہے؟

جواب میں بتایا گیا کہ ٹریفک قوانین کے مطابق گاڑی کسی اور کو دینے کی ممانعت ہے تاہم اگر کسی دوسرے شخص کو گاڑی دی جائے تو اس کے لیے قانونی کارروائی کرتے ہوئے این او سی بنایا جانا لازمی ہوتا ہے، جس کے تحت عارضی بنیادوں پر گاڑی دوسرے شخص کے نام رجسٹر ہوتی ہے (محض استعمال کے لیے)۔

این او سی کو عربی میں تفویض کہا جاتا ہے جس کا مقصد گاڑی کو استعمال کرنے کی اجازت ہے، تفویض کی کارروائی ابشر کے ذریعے کی جاتی ہے جس کی کنفرمیشن موبائل میسج کے ذریعے کردی جاتی ہے۔

این او سی رجسٹرکروانے کے بعد کسی بھی ٹریفک خلاف ورزی پر ہونے والا چالان اسی شخص کے نام پر ارسال کیا جائے گا جو اس وقت گاڑی استعمال کر رہا ہوگا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں