The news is by your side.

Advertisement

امریکی صدر اور کانگریس میں اختلافات، سرکاری دفاتر بند

واشنگٹن: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور کانگریس کے درمیان اختلافات میں شدت آگئی، سرکاری دفاتر بند کردیے گئے۔

تفصیلات کے مطابق میکسیکو سرحد پر دیوار کی تعمیر سے متعلق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور امریکی کانگریس کے درمیان شدید اختلافات ہیں، جس کے باعث سرکاری دفاتر بند کردیے گئے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ سرکاری دفاتر کی بندش کے باعث دستاویزی سرگرمیاں معطل ہیں، دفاتر کے دوبارہ کھلنے کا ابھی تک کوئی حتمی فیصلہ سامنے نہیں آیا۔

دفاتر بند ہونے پر صدر ٹرمپ اور ارکان کانگریس میں الزام تراشی کا سلسلہ بھی شروع ہوچکا ہے۔

وائٹ ہاؤس میں تعینات امریکی فوجیوں سے خطاب کے بعد میڈیا سے گفتگو میں صدر ٹرمپ کا کہنا تھا کہ کانگریس کی جانب سے میکسیکو سرحد پر دیوار کی تعمیر کے لیے فنڈز کی منظوری تک شٹ ڈاؤن رہے گا اور وہ یہ نہیں بتا سکتے کہ حکومت کا کام کب شروع ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ دیوار کی تعمیر کے لیے فنڈ کی منظوری رخصت پر بھیجے گئے ملازمین چاہتے ہیں۔

امریکا صدر میکسیکوکی سرحدپردیوارتعمیرکرنے کے لیے بیتاب

دوسری جانب کانگریس ارکان کا کہنا ہے کہ ٹرمپ میکسیکو سرحد پر دیوار کی تعمیر کے لیے لڑائی پر اتر آئے ہیں، ٹرمپ نے ملک کو بحران کی جانب دھکیل دیا ہے۔

خیال رہے کہ امریکی صدارتی انتخابات کے دوران کیے گئے وعدوں میں سے صدر ڈونلڈٹرمپ میکسیکو کی سرحد پردیوارکی تعمیر کا وعدہ بھی پورا کرنے کے لیے بے تاب ہیں۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ جہاں سفری پابندیوں، اسلامی شدت پسندی کا خاتمہ، ایران معاہدہ اور سب سے پہلے امریکا جیسے وعدے پورے کیے وہیں میکسیکو کی سرحد پر دیوار تعمیر کرنے کا وعدہ بھی بہت جلد پورا کرنے کے لیے بھرپور کوششیں کررہے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں